آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
منگل12؍ربیع الثانی 1441ھ 10؍ دسمبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

روہنگیا نسل کشی: معاملہ عالمی عدالت میں

روہنگیا مسلمانوں کا دنیا کی مظلوم ترین اقلیت ہونا عالمی سطح پر تسلیم کیا جاتا ہے لیکن اقوامِ متحدہ اس مسئلے کے حل میں بھی مسلمانوں کے دیگر مسائل کی طرح اب تک کوئی نتیجہ خیز کردار ادا نہیں کرسکی۔ تاہم مغربی افریقہ کا ملک اسلامی جمہوریہ گیمبیا قابلِ داد ہے کہ روہنگیا مسلمانوں کا معاملہ اقوامِ متحدہ میں اٹھانے کا محرک اول بنا جس کے بعد یہ مقدمہ 57ملکی اسلامی تعاون تنظیم کی جانب سے عالمی عدالت میں دائر کیا گیا ہے۔ درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ میانمار نے اقوامِ متحدہ کے نسل کشی کنونشن 1948کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ریاست رخائن میں مسلم اقلیت کے خلاف فوجی کارروائی کی لہٰذا عدالت روہنگیا مسلمانوں کو مزید نقصان سے بچانے کے لئے فوری اقدامات کرے۔ انہوں نے امید ظاہر کی ہےکہ دسمبر میں درخواست کی پہلی سماعت ہو گی۔ خونِ مسلم کی ارزانی کے مناظر دنیا بھر میں عام ہیں، مشرقِ وسطیٰ کی خانہ جنگی اورفلسطین، کشمیر اور میانمار میں نسل کشی کی شکل میں مسلمان لہولہان ہیں۔ تاہم میانمار کے مسلمانوں کو ان کی انتہائی کسمپرسی کے سبب دنیا کی مظلوم ترین اقلیت قرار دیا جاتا ہے۔ عباسی خلیفہ ہارون الرشید کے عہد میں مسلمان تاجروں کے ذریعے اسلام اس علاقے میں پہنچا اور اتنا مقبول ہوا کہ ہندوستان میں مسلم حاکمیت سے بھی پہلے 1430میں

سلیمان شاہ نے رخائن میں اسلامی حکومت قائم کی جو 350برس قائم رہی لیکن اس کے زوال کے بعد سے اب تک صوبہ رخائن کے مسلمان زیر عتاب ہیں، ان پر ہونیوالے مظالم پر پاکستان ، ترکی اور بنگلہ دیش کے سوا عالمی برادری ہی نہیں مسلم دنیا نے بھی کف افسوس ملنے کے سوا کچھ نہ کیا حالانکہ 57مسلمان ملکوں میں دنیا کے انتہائی متمول ممالک شامل ہیں۔اس معاملہ کا منصفانہ فیصلہ عالمی برادری کی ذمہ داری ہے۔ اس ضمن میں اسلامی جمہوریہ گیمبیا کی کاوش انتہائی لائقِ ستائش ہے اور اس اقدام کی کامیابی کے لیے اس کا مکمل ساتھ دینا پوری امت مسلمہ کا فرض ہے۔