آپ آف لائن ہیں
پیر14؍ذیقعد 1441ھ 6؍جولائی 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

بر طانیہ آنے والوں کو 14 دن کیلئے الگ رہنا ہوگا

ہیلی فیکس (زاہدانور مرزا) حکومت نے کہا ہے کہ برطانیہ آنے والے افراد کو کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو کم کرنے میں مدد کے لئے 8 جون سے 14 دن کے لئے خود کو الگ تھلگ رکھنا ہوگا۔ مسافروں کو حکومت کو یہ بتانے کی ضرورت ہوگی کہ انگلینڈ میں بے ترتیب اسپاٹ چیکس اور £ 1،000 جرمانے کے ذریعے نفاذ کے ساتھ وہ کہاں سے الگ ہوجائیں گے۔سیکرٹری داخلہ پریتی پٹیل نے کہا کہ اس اقدام سے ہماری سرحد عبور کرنے والے معاملات کا خطرہ کم ہوجائے گا۔ لاری ڈرائیور، کھیتوں میں کام کرنے والے کارکنان اور کورونا وائرس طب سے منسلک افراد مستثنیٰ ہوں گے۔ جمہوریہ آئرلینڈ، چینل جزائر اور آئل آف مین سے سفر کرنے والوں پر بھی اس شرط کا اطلاق نہیں ہوگا۔ بارڈر فورس کے سربراہ پال لنکن کے مطابق اگر کسی فرد کے پاس مناسب رہائش نہیں ہےتو اسے اپنے اخراجات پر حکومت کے ذریعہ بندوبست کردہ سہولیات میں رہنا ہوگا۔ ہوم آفس کے مطابق نئی پالیسی پورے برطانیہ میں ہوگی، حالانکہ اسکاٹ لینڈ، ویلز اور شمالی آئرلینڈ میں اس کو کس طرح نافذ کیا جاتا ہے اس کا تعین وہاں کی انتظامیہ کرے گی۔ پریتی پٹیل نے ڈائوننگ اسٹریٹ میں بریفنگ میں میڈیا کو بتایا کہ یہ اقدامات یکطرفہ نہیں، انہوں نے کہا ہم مکمل طور پر بند نہیں ہو رہے ہیں۔ ہم اپنی سرحدیں بند نہیں کررہے ہیں۔ اس موسم گرما میں غیر ملکی تعطیلات کے امکان کے بارے میں پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ یہ چھٹیوں کی بکنگ کے بارے میں قطعی نہیں ہے۔ ہم دوسری لہر سے بچنا چاہتے ہیں۔
یورپ سے سے مزید