آپ آف لائن ہیں
منگل20؍ذی الحج 1441ھ 11؍اگست 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

کچھ فلموں سے اقربا پروری کی وجہ سے ہاتھ دھونا پڑا، تاپسی پنوں

بھارتی اداکار ہ تاپسی پنوں نے انکشاف کیا ہے کہ بھارتی انڈسڑی میں اقربا پروری کا رجحان پائے جانے کی وجہ سے اُنہیں بہت سی فلموں سے ہاتھ دھونا پڑا ہے ۔

حال ہی میں خودکشی کرنے والے بھارتی اداکار سوشانت سنگھ کی موت کی وجہ بھارتی انڈسٹری میں اقرباپروری کلچر کو ٹھہرایا جا رہا ہے جس کے خلاف نامور فنکار آواز اٹھا رہے ہیں ، متعدد فنکاروں کے بعد اب بھارتی انڈسٹری میں باہر سے آکر اپنا کام اور نام منوانے والی اداکارہ تاپسی پنو نے بھی انکشاف کیا ہے کہ اقرباپروری  ’ نیپوٹزم‘ کی وجہ سے انہیں بھی کئی فلمیں نہیں مل سکیں۔

بھارتی ویب سائٹ ’ ہندوستان ٹائمز ‘ کو انٹرویو کے دوران فلم ’ تھپڑ‘ کی ہیروئن تاپسی پنوں نے کہا کہ ’ بالی ووڈ میں اقربا پروری کا رجحان پایا جاتا ہے جس کے سبب انہیں بھی اپنے کیریئر کے آغاز ہی میں کئی فلموں سے ہاتھ دھونا پڑا، وہ اس رویئے سے بہت پریشان اور دلبرداشتہ بھی ہوئی تھیں۔‘

تاپسی پنوں نے کہا ہے کہ ’ فلم میں کام دینے سے پہلے دیکھا جاتا ہے کہ آپ انڈسٹری کے اندر سے ہیں یا باہر شہر سے آئے ہیں، اگر آپ کا تعلق کسی معروف فلمی گھرنے سے ہے تو آپ پر اور آپ کی صلاحیتوں پر اعتماد کیا جاتا ہے اور اگر فلم انڈسٹری میں باہر سے آئے ہیں اور آپ کا کوئی جاننے والا بھی نہیں ہے تو آپ کی صلاحیتوں پر بھروسہ نہیں کیا جاتا ۔‘

تاپسی نے کہا کہ اگر آپ اسٹار کڈز ہوں اور آپ کی پہلی فلم ریلیز کی جائے تو شائقین دیکھنا چاہتے ہیں وہ پہلے سے ٹکٹس خرید لیتے ہیں اور سینما میں آپ کو دیکھنے کی خواہش رکھتے ہیں ، باہر سے آنے والے فنکار جنہیں کوئی نہیں جانتا اُن کی فلموں کی ٹکٹس کی بکنگ پہلے سے کوئی نہیں کرواتا، انہیں شائقین سینما میں آکر دیکھنے میں دلچسپی ہی نہیں رکھتے ۔

انہوں نے کہا کہ اگر آپ کسی فلمی گھرانے میں پیدا ہوئے ہیں تو آپ کی منزل آسان ہوتی ہے مگر باہر سے آنے والوں کے لیے ایسا نہیں ہے ، باہر سے آنے والوں کو بہت محنت سے نام کمانا پڑتا ہے جو کہ نا ممکن نہیں ہے مگر آسان بھی نہیں ہے ،  اپنا نام بناتے ہوئے اور کام ملنے میں بہت وقت لگتا ہے ۔

32 سالہ تاپسی پنو کا کہنا تھا کہ اگر آپ باہر سے آئے ہیں اور اس انڈسٹری میں نام بنانے میں کامیاب ہو گئے ہیں تو اس بات کی خوشی ہوتی ہے کہ آپ نے جو کچھ بھی حاصل کیا اپنے بل بوتے پر کیا ہے ، کوئی آپ کو دیکھ کر یہ نہیں کہہ سکتا کہ فلانے انسان نے اسے یہاں تک پہنچایا ہے یا فلانے انسان کی وجہ سے اسے اس فلم میں کام ملا ۔

تاپسی پنوں کا کہنا تھا کہ فلم انڈسٹری کے باہر سے آکر اپنا نام بنانے میں ہی اُن کی سب سے بڑی کامیاب ہے اور یہی اُن کی طاقت ہے ، شائقین اسٹار کڈز کے بجائے اُن فنکاروں کو زیادہ پسند کرتے ہیں جو محنت سے اور بغیر کسی جان پہچان اور  رشتے داروں کے اپنے کام سے خود کو منواتے ہیں۔

انٹرٹینمنٹ سے مزید