آپ آف لائن ہیں
جمعہ7؍صفر المظفّر 1442ھ 25؍ستمبر2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

کراچی: حاملہ شیرنی چڑیا گھر منتقلی کے دوران ہلاک


کراچی کے علاقے گلشنِ حدید میں کمپاؤنڈ میں رکھی حاملہ شیرنی چڑیا گھر منتقلی کے دوران ہلاک ہو گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق گلشنِ حدید کے کمپاؤنڈ میں شیروں کی چڑیا گھر منتقلی کے دوران ایک شیرنی ہلاک ہو گئی۔

شیرنی حاملہ تھی اور پنجرے میں منتقلی کے دوران مشتعل ہوئی جس پر شیرنی کو بے ہوشی کا انجکشن لگایا گیا۔


انجکشن لگنے کے بعد شیرنی بے ہوش ہو گئی اور اس کے بعد دوبارہ ہوش میں نہ آ سکی۔

اس صورتِ حال پر محکمۂ وائلڈ لائف نے باقی ماندہ شیروں کی چڑیا گھر منتقلی کو مؤخر کر دیا ہے۔

کچھ روز قبل گلشنِ حدید کے علاقے معظم ٹاؤن کے نجی کمپاؤنڈ میں 6 شیروں کے پالے جانے کے انکشاف ہوا تھا جس پر علاقے میں خوف و ہراس پھیل گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیئے: کراچی، گھر میں شیر پالنے کا معاملہ، شہری کا بیان ریکارڈ

شہریوں نے احتجاج کرتے ہوئے کہا تھا کہ شیر پنجرے سے نکل کر مکان کے کمپاؤنڈ میں گھوم رہے ہوتے ہیں اگر یہ شیر گھر سے باہر نکل آئیں تو علاقہ مکینوں کی جان کو خطرہ ہے۔

کنزرویٹر سندھ وائلڈ لائف جاوید مہر کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ کہ وائلڈ لائف منی زو کا پرمٹ جاری کرتا ہے جس کے تحت گوشت خور جانور رکھنے کی اجازت نہیں ہوتی، یہ اجازت نامے کی خلاف ورزی ہے۔

علاقے میں شیروں کے پالے جانے کے انکشاف پر پر محکمۂ جنگلی حیات سندھ نے کارروائی کر تے ہوئے شیروں کو اپنی تحویل میں لیا تھا۔

قومی خبریں سے مزید