آپ آف لائن ہیں
جمعرات11؍ ربیع الاوّل 1442ھ 29اکتوبر2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

کالے نمک کے صحت پر حیرت انگیز فوائد

کالے نمک کے استعمال کے بے شمار فوائد ہیں جن سے اکثر افراد ناواقف ہیں اور اسے استعمال میں نہیں لاتے، کالا نمک وزن کم کرنے سے لے کر دل کے امراض تک کے لیے مفید ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق کالا نمک پروسیسڈ نمک سے زیادہ مفید پایا گیا ہے، اس میں کئی بیماریوں کا علاج ہے جبکہ اس کے استعمال سے دل کی صحت، وزن میں کمی، جوڑوں کے درد میں آرام، سوزش میں کمی سمیت کئی امراض میں مفید ہے۔


کالے نمک کو متعدد غذاؤں میں استعمال کیا جا سکتا ہے جیسے کہ سالاد، دہی، پھلوں اور دالوں کے سوپ وغیرہ میں، کالے نمک کے استعمال سے بلڈ پریشر بھی متوازن رہتا ہے۔

کالے نمک میں سوڈیم کی مقدار بھی کم پائی جاتی ہے جبکہ گھروں میں استعمال کیے جانے والے ریفائن نمک میں سوڈیم کی مقدار زیادہ پائے جانے کی وجہ سے انسان متعدد صحت سے متعلق شکایات میں گھر جاتا ہے ۔

کالے نمک کو اپنی غذا میں شامل کرنے سے حاصل ہونے والے فوائد مندرجہ ذیل ہیں :

وزن میں کمی

سوڈیم کی کم مقدار کے سبب کالے نمک کے استعمال سے پیٹ پھولنے کی شکایت سے نجات ملتی ہے جبکہ جسم میں اضافی پانی بھی جمع نہیں ہوتا، کالےنمک کے استعمال سے وزن میں کلوز میں کمی لائی جا سکتی ہے۔

نظام ہاضمہ کی کارکردگی

کالے نمک کے استعمال سے نظام ہاضمہ کی کارکردگی میں مثبت فرق پڑتا ہے، آنتوں کی صفائی اور مضر صحت مادوں کا اخراج ممکن ہوتا ہے ۔

جسم کے درد میں کمی کا سبب

کالے نمک کے استعمال سے جہاں، بلڈ پریشر متوازن رہتا ہے وہیں جِلدی امراض کا بھی علاج ہوتا ہے، نیم گرم پانی میں کالا نمک ملا کر  ٹب باتھ لیا جائے یا اپنے پاؤں اس پانی میں بگھوئے جائیں تو دن بھر کی تھکاوٹ سے چھٹکارہ حاصل ہوتا ہے اور ذہنی تناؤ  سے راحت ملتی ہے۔

سانس کی بیماری کا علاج

جن افراد کو سانس لینے کے نظام سے متعلق شکایات ہوتی ہیں اُنہیں کالے نمک کا استعمال تجویز کیا جاتا ہے، کالے نمک کے استعمال سے مٹی سے ہونے والی الرجی یا سانس کی بیماری میں آرام ملتا ہے، کالے نمک والے پانی سے بھاپ لینے میں سانس کی نالی اور بلغم کی صفائی ہوتی ہے جس کے نتیجے میں سانس لینے میں دقت دور ہوتی ہے۔

نیم گرم پانی میں کالا نمک ملا کر غراراے کرنے سے گلے کی خراشوں میں آرام ملتا ہے۔

پٹھوں کے درد میں آرام

پٹھوں کے درد اور کھنچاؤ کی شکایت میں کالے نمک کا استعمال مفید ثابت ہوتا ہے، جن افراد کو  پٹھوں کے درد کی شکایت ہو اُنہیں ریفائن نمک کے بجائے کالے نمک کا استعمال تجویز کیا جاتا ہے۔

کالے نمک میں پوٹاشیم کی مقدار پائی جاتی ہے جو کہ پٹھوں کی صحت کے لیے ضروری جز سمجھا جاتا ہے ۔

صحت سے مزید