آپ آف لائن ہیں
بدھ16؍ربیع الثانی 1442ھ2؍دسمبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

دہشت گردی کی اطلاعات تھیں، بچے اور مدرسے سافٹ ٹارگٹ تھے: شوکت یوسفزئی

خیبر پختونخوا کے وزیر  برائے ثقافت شوکت یوسفزئی نے پشاور کے علاقے دیر کالونی میں کوہاٹ روڈ پر واقع مدرسے میں دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کی اطلاعات تھیں، بچے اور مدرسے سافٹ ٹارگٹ تھے۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گردوں کو مذہب سے تعلق نہیں، علاقے میں کافی عرصے سے امن تھا، سیکورٹی بھی بہتر تھی۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ بچے اور مدرسے سافٹ ٹارگٹ تھے، دہشت گردی کی اطلاعات تھیں، کوئٹہ اور پشاور میں دہشت گردی تھریٹ الرٹ تھا۔

انہوں نے کہا کہ تھریٹ الرٹ کے بعد سیکورٹی مزید سخت کردی گئی تھی، دہشت گردوں نے بزدلانہ کارروائی کی ہے۔

شوکت یوسفزئی نے کہا کہ دہشت گرد اپنے مقاصد کیلئے سافٹ ٹارگٹ دیکھتے ہیں، وزیراعلیٰ نے سیکورٹی صورتحال پر اجلاس بلالیا ہے۔

خیال رہے کہ کوہاٹ روڈ پر واقع مدرسے میں دھماکے کے نتیجے میں 7 افراد شہید اور 70 زخمی ہو گئے۔

ریسکیو ذرائع کا کہنا ہے کہ دھماکے کے وقت مدرسے میں تدریسی سلسل جاری تھا، دھماکے کے نتیجے میں شہید و زخمی ہونے والوں میں بڑی تعداد بچوں کی ہے۔

پولیس، سیکیورٹی فورسز اور ریسکیو ٹیمیں دھماکے کے مقام پر پہنچ چکی ہیں جو امدادی کاموں میں مصروف ہیں۔

ریسکیو 1122 کے حکام کے مطابق زخمی ہونے والے متعدد بچوں کی حالت تشویشناک ہے۔

قومی خبریں سے مزید