اپریل 2019 کی نسبت ابھی بھی ہوائی ٹریفک میں 32 فیصد کمی
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

اپریل 2019 کی نسبت ابھی بھی ہوائی ٹریفک میں 32 فیصد کمی

کورونا وائرس کے حوالے سے صورتحال کافی بہتر ہونے اور ویکسین کا استعمال شروع ہونے کے بعد سے دنیا بھر میں ہوائی سفر میں کافی بہتری آچکی ہے۔

تاہم 16 اپریل 2019 کی نسبت سال 2019 کے 16 اپریل کے روز 34 ہزار 663 پروازوں کی اڑان کم ہوئی ہے۔

جو سال 2019 کے 16 اپریل کی نسبت اب بھی 32 فیصد نیچے دکھائی گئی ہے۔


دنیا بھر میں فضا میں کمرشل ہوائی جہازوں کی آمدورفت کا جائزہ لینے والی کمپنی کے مطابق 16 اپریل 2019 کو ایک لاکھ 16 ہزار 393 ہوائی جہازوں نے دنیا بھر میں اڑان بھری۔

16 اپریل 2020 کو جب کورونا وائرس کا جادو سر چڑھ کر بول رہا تھا اس روز دنیا بھر میں 30 ہزار 275 جہاز کا ہوائی سفر ریکارڈ کیا گیا۔

کمپنی کے مطابق 16 اپریل 2021 کے اعداد و شمار کے مطابق جمعہ کو دنیا بھر میں 81 ہزار 730 مختلف کمرشل پروازیں فضا میں موجود رہیں۔

کمپنی کے مطابق اگرچہ صورتحال سال 2020 کی نسبت بہت بہتر ہوئی ہے تاہم ابھی بھی پروازیں معمول سے 32 فیصد سے کم ہیں۔

ہوائی سفر کے ماہرین کے مطابق پوری دنیا میں اندرون ملک ہوائی سفر کرنے والوں میں اضافہ ہوا ہے جبکہ بین الاقوامی ہوائی سفر میں صورتحال معمول پر آنے میں ابھی بھی وقت لگے۔

جس کی وجہ مختلف ملکوں کی جانب سے سیاحوں کے داخلوں پر پابندی ہے اور کوئی بھی ملک سیاحوں کو ویزا جاری نہیں کر رہا۔

قومی خبریں سے مزید