• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
,

سیکریٹری بننے کے بعد گریڈ 22 کے افسر کی چاندی ہوجاتی ہے، رپورٹ


پاکستان انسٹیٹیوٹ آف ڈیولپمنٹ اکنامکس کی رپورٹ کے مطابق سیکرٹری تعینات ہونے کے بعد گریڈ 22 کے افسر کی تنخواہ اقوام متحدہ کے افسر سے بھی زیادہ ہوجاتی ہے۔ سرکاری افسران تمام سہولتوں کے باوجود تنخواہوں میں اضافہ چاہتے ہیں۔

سول سرونٹ کی آمدن نجی شعبے کی نسبت 20 فیصد زیادہ  ہے، گریڈ 22 کے افسر کی تنخواہ دوسرے افسروں کی تنخواہوں سے 10 گنا زائد ہے۔

انسٹیوٹ فار ڈیولپمنٹ آف اکنامکس کی رپورٹ میں انکشاف کیاگیاہےکہ بی اے کی ڈگری رکھنے والی سول سرونٹ پرائیوٹ سیکٹر کے مقابلے میں ساڑھے 9 فیصد زیاہ تنخواہ وصول کررہے ہیں، صرف ایم فل اور پی ایچ ڈی کرنے والوں کو نجی شعبے میں پر کشش ملازمتیں مل پاتی ہیں۔

پائیڈ رپورٹ کے مطابق بیوروکریسی خفیہ طور پر بہت زیادہ مالی فوائد حاصل کررہی ہے۔ سرکاری ملازمین کو گھر، ملازمین اور الاؤنس تنخواہ کا حصہ شمار نہیں ہوتے۔

گریڈ 20 کے ملازم کی تنخواہ ایک لاکھ 660 روپے ہے تاہم اس میں مختلف الاونسز، گاڑی، میڈ یکل اور گھر کی سہولت شامل کر لی جائے تو ماہانہ آمدن 7 لاکھ 30 ہزار تک پہنچ جاتی ہے۔

اسی طرح گریڈ 21 کے افسر کی تنخواہ ایک لاکھ 12 ہزار کے قریب ہے جو سہولتیں شامل کے کے بعد 9 لاکھ 80 ہزار ماہانہ بنتی ہے۔

گریڈ 22 کے افسر کی تنخواہ ایک لاکھ 23 ہزار 500 کے قریب ہے جو دوسری سہولتیں ملانے کے بعد 11 لاکھ روپے بن جاتی ہے۔

قومی خبریں سے مزید
خاص رپورٹ سے مزید