• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

برسلز، نیٹو 2030ء انیشیٹیوو اور نیٹو اتحاد کو مزید مضبوط بنانے پر اتفاق

نیٹو رہنماؤں نے برسلز میں منعقد ہونے والی سمٹ میں نیٹو 2030ء انیشیٹیوو اور نیٹو اتحاد کو مزید مضبوط بنانے پر اتفاق کیا ہے۔

اس بات کا اعلان نیٹو سیکریٹری جنرل یین سٹولٹنبرگ نے پیر کے روز دیر گئے اپنی پریس کانفرنس اور بعد ازاں نیٹو کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے میں کیا۔ 

نیٹو کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے کے مطابق نیٹو ہیڈ کوارٹرز برسلز میں منعقد ہونے والی اس نیٹو سمٹ 2021ء میں نیٹو ممبر اتحاد کے رہنماؤں نے اگلی دہائی اور اس کے بعد کے لائحہ عمل پر اتفاق کر لیا ہے۔

نیٹو رہنماؤں نے روس کے بارے میں بیک وقت دفاع اور ڈائیلاگ کی دوہری پالیسی اختیار کرنے کی تصدیق کرتے ہوئے نیٹو کے شراکت دار، یوکرین اور جارجیا کی حمایت جاری رکھنے کا اعادہ کیا ہے۔

نیٹو رہنماؤں نے چین سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنے بین الاقوامی وعدوں کو برقرار رکھتے ہوئے بین الاقوامی نظام میں ذمہ داری کے ساتھ عمل کرے۔

انہوں نے چین کے دنیا میں بڑھتے ہوئے اثرو رسوخ اور بین الاقوامی پالیسیوں کو درپیش چیلنجز سے نمٹنے اور نیٹو کی سلامتی سے جڑے مفادات کے دفاع کے لیے چائنا کے ساتھ گفتگو جاری رکھنے کی ضرورت پر بھی اتفاق کیا۔

نیٹو رہنماؤں نے سمٹ کے دوران  ’نیٹو 2030 انیشیٹیوو‘ کے پر جوش ایجنڈے پر اتفاق کیا تا کہ آج اور آنے والے کل کے چیلنجز کا مقابلہ کیا جا سکے۔

اس کے ساتھ ہی انہوں نے سیاسی مشاورت اور اجتماعی دفاع کو تقویت دینے، نیٹو کی ٹیکنالوجی کی برتری میں اضافہ کرنے، قواعد پر مبنی بین الاقوامی آرڈر کو برقرار رکھنے، نیٹو شراکت داروں کے لیے تربیت اور ان کی صلاحیت میں اضافہ کرنے، ماحولیاتی تبدیلی کے سیکیورٹی پر پڑنے والے اثرات کو حل کرنے اور 2022ء میں نیٹو سربراہ اجلاس کے لیے نیٹو کا اگلا اسٹریٹجک تصور تیار کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

نیٹو سیکریٹری جنرل کے مطابق اتحادیوں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ ہمیں نیٹو میں مل کر سرمایہ کاری کرنے کی ضرورت ہے، اس کے لیے نیٹو کے تینوں بجٹ یعنی فوجی، سول اور بنیادی ڈھانچے کے وسائل کو ترقی دینے کی ضرورت ہوگی۔

نیٹو رہنماؤں نے نیٹو کے لیے ایک نئی سائبر دفاعی پالیسی پر بھی اتفاق کیا اور واضح کیا کہ الائنس دوسرے فوجی شعبوں کی طرح خلاء میں بھی اپنے دفاع کا عزم رکھتا ہے۔

اعلامیے کے مطابق نیٹو رہنماؤں نے افغان افواج اور اداروں کے لیے تربیت اور مالی مدد، کابل میں موجود بین الاقوامی ہوائی اڈے کی مستقل فعالیت کی یقینی بنانے کے لیے مالی اعانت سمیت افغانستان کے ساتھ کھڑے رہنے کے عمل کی تصدیق کی ہے۔

نیٹو اعلامیے کے مطابق اس حوالے سے سیکریٹری جنرل نیٹو نے زور دے کر کہا کہ ہم نے زیادہ مسابقتی دنیا میں نیٹو کو مزید مضبوط بنانے کے لیے اہم فیصلے لیے ہیں۔

بین الاقوامی خبریں سے مزید