• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پاکستانی پروازوں سے پابندی اٹھانے کا معاملہ، اماراتی حکام سے گفتگو جاری ہے، دفتر خارجہ

ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ چوہدری کا کہنا ہے کہ متحدہ عرب امارات کے لیے پاکستانی پروازوں پر پابندی کے معاملے کے حوالے سے پاکستانی وزارت خارجہ اور یو اے ای کی وزارت خارجہ سے رابطے میں ہے۔

جنگ سے بات کرتے ہوئے ترجمان کا کہنا تھا کہ دنیا کے کئی دیگر ممالک کے مقابلے میں پاکستان میں کورونا وبا کی صورت حال بہتر ہو چکی ہے، امید ہے کہ متحدہ عرب امارات کی حکومت جلد پاکستان کے حوالے سے اپنی ٹریول ایڈوائزری ختم کر دے گی۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے حال ہی میں اپنے اماراتی ہم منصب شیخ عبداللہ بن زید سے رابطوں کے دوران اس معاملے پر بات کی ہے۔

ترجمان سول ایوی ایشن اتھارٹی سعد ایوب کا کہنا ہے کہ یو اے ای کے جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی کی طرف سے جاری کردہ نوٹیفیکشن کے مطابق پاکستان، بھارت، جنوبی افریقہ اور نائیجیریا سمیت کئی دیگر ممالک کی پروازوں کی یو اے ای میں داخلے پر پابندی 21 جولائی تک برقرار رہے گی۔

انھوں نے مزید کہا کہ اس کے بعد پابندی ہٹانے یا برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا جائے گا، یو اے ای کی طرف سے رواں سال 12 مئی سے پاکستان سے آنیوالی پروازوں پر پابندی عائد کر دی گئی تھی۔

یواے ای کے جنرل ایوی ایشن اتھارٹی کی طرف سے جاری نوٹیفیکیشن کے مطابق پاکستان، بھارت ، بنگلہ دیش، سری لنکا، نیپال، نائجیریا، جنوبی افریقہ، اور یوگنڈا سمیت تیرہ ممالک کی پروازوں پر اکیس جوجولائی تک پابندی برقرار رہے گی۔

تاہم ان ممالک سے آنیوالی کارگو، بزنس اور چارٹرڈ فلائٹس پر پابندی نہیں ہو گی، امارات کا کارآمد ریذیڈنس ویزا رکھنے والے اور یو اے ای کی منظور شدہ کورونا ویکسن لگوانے کے بعد یو اے ای کا سفر کر سکیں گے۔

نوٹیفیکشن کے مطابق جنوبی افریقہ سے مکمل ویکسین لگوا کر آنے والوں کو بھی یو اے ای آنے کی اجازت ہو گی، نائجیریا سے وہ مسافرآسکیں گے جن کا یو اے ای میں داخلے سے اڑتالیس گھنٹے قبل کورونا وائرس ٹیسٹ منفی آیا ہو۔

پاکستان کے سفارتی ذرائع کے مطابق بھارت سے یو اے ای کا ریذیڈینس ویزا رکھنے والوں اور دیگر ممالک جہاں کورونا وبا کی صورت حال پاکستان سے زیادہ خراب ہے، کو امارات کے سفر کی اجازت دینا اور اسی کیٹیگری کے پاکستانیوں کو نہ دنیا کئی سوالات کو جنم دے رہا ہے۔

قومی خبریں سے مزید