• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پاکستان اور آئی اے ای اے کے درمیان تعاون بڑھتا رہے گا، گروسی

ویانا(نمائندہ جنگ) ویانا میں چیئرمین پاکستان اٹامک انرجی کمیشن محمد نعیم جو بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی (آئی اے ای اے) کی 65 ویں جنرل کانفرنس میں پاکستان کے وفد کی قیادت کر رہے ہیں نے ڈائریکٹر جنرل آئی اے ای اے رافیل ماریانو گروسی سے خصوصی ملاقات کی۔ ویانا میں بین الاقوامی تنظیموں میں پاکستان کے مستقل نمائندے سفیر آفتاب احمد کھوکھر بھی ملاقات میں موجود تھے۔ چیئرمین پی اے ای سی اور ڈائریکٹر جنرل گروسی نے پاکستان اور آئی اے ای اے کے درمیان جاری تعاون کا جائزہ لیا۔ ڈائریکٹر جنرل گروسی نے کہا کہ پاکستان اور ایجنسی کے درمیان بے مثال تعاون بڑھتا رہے گا۔ چیئرمین پی اے ای سی نے ڈائریکٹر جنرل کو بجلی کی پیداوار ، صحت ، زراعت اور صنعت کے شعبوں میں ایٹمی ٹیکنالوجی کے استعمال کو بڑھانے میں پاکستان کی حالیہ کامیابیوں سے آگاہ کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ بہترین اور باہمی فائدہ مند تعاون کی بدولت ممکن ہوا ہے جو پاکستان نے آئی اے ای اے کے ساتھ کئی سالوں سے حاصل کیا ہے۔ انہوں نے ڈی جی آئی اے ای اے کو یقین دلایا کہ وہ زونوٹک بیماریوں اور پلاسٹک کی آلودگی ، بالترتیب ZODIAC اور NUTEC پلاسٹک سے نمٹنے کے لیے ایجنسی کے تازہ ترین اقدامات کی حمایت کریں گے۔ چیئرمین پی اے ای سی نے ڈائریکٹر جنرل آئی اے ای اے کا پاکستان کو کووڈ -19 تشخیصی آلات فراہم کرنے پر شکریہ بھی ادا کیا جس نے وبائی امراض سے نمٹنے کے لیے پاکستان کی کوششوں میں اضافہ کیا۔ڈائریکٹر جنرل گروسی نے آسٹریا کے سیبرسڈورف میں آئی اے ای اے کی ایٹمی ایپلی کیشن لیبارٹریوں کو جدید بنانے کے لیے ایجنسی کے ری نیوال 2 منصوبے میں پاکستان کی مالی مدد کی تعریف کی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کا سینٹر آف ایکسی لینس ان نیوکلیئر سیکورٹی (پی سی ای این ایس) سی ای بی ایس ڈورف میں آئی اے ای اے کے منصوبہ بند نیوکلیئر سیکورٹی ٹریننگ اور ڈیمونسٹریشن سینٹر کے ساتھ بھی تعاون کر سکتا ہے۔چیئرمین پی اے ای سی نے ڈائریکٹر جنرل گراسی کو مختلف شعبوں میں پی اے ای سی کے 65 سالوں کے آپریشن کی یاد میں ایک سوینئر پیش کی جس نے پاکستان کی سماجی و اقتصادی ترقی میں بے پناہ شراکت کی ہے۔
یورپ سے سے مزید