| |
Home Page
جمعہ 25 ذیقعدہ 1438ھ 18 اگست 2017ء
رضا علی عابدی
دوسرا رخ
August 18, 2017
کچھ علم کی اور کچھ کتاب کی بات

برطانیہ میں دو چیزیں دیکھنے کے قابل ہیں، اوّل ملکہ الزبتھ اور دوسرے پاکستانی آبادیاں۔ ملکہ تو آخر ملکہ ہیں، ملیں نہ ملیں لیکن تمام بڑے شہروں میں وہ علاقے میلے کا سماں پیش کرتے ہیں جن میں پاکستان، آزاد کشمیر، بھارت اور بنگلہ دیش کے باشندوں نے بسیرا کیا ہے۔ ایسے شہروں میں چند ایک تو اس دیسی آبادی کی وجہ سے مشہور ہیںمثلاً لندن کے...
August 11, 2017
مرد یا عورت، کون زیادہ سیانا ہے

مرد بالادست ہے اور عورت کمزور، اس بات کے حق میں اور خلاف بولنے والوں کی زبانیں کسی حال تھکنے کا نام نہیں لیتیں۔ یہ جھگڑا سدا سے جاری ہے اور کون جانے کب تک چلے گا۔دونوں طرف کے وکالت کرنے والے بڑے بڑے وزنی دلائل لے کر میدان میں اترتے ہیں اور ایسی ایسی تاویلیں پیش کرتے ہیں کہ ایک بار تو ان کی بات پر یقین آنے لگتا ہے۔مرد زیادہ توانا ہے،...
August 04, 2017
پتلی گلی کا مشاعرہ

کوئی یقین کرے گا کہ لندن میں مشاعروں اور ادبی محفلوں کے لئے جلسہ گاہ یا ہال ملنا ناممکن ہوتا جاتا ہے؟شہر میں سماجی تقریبات کا تانتا بندھا ہوا ہے۔ سارے ہال یا تو پہلے ہی سے محفوظ کرالئے گئے ہیں یا ان کے کرائے اتنے بڑھا دئیے گئے ہیں کہ منتظمین کانوں کو ہاتھ لگاتے ہیں۔ایسا ہی ایک مشاعرہ پچھلے دنوں ہوا۔اس کا اہتمام انجمن ترقی اردو،...
July 28, 2017
نیّر بھائی کا آخری لفظ

فارسی کے استاد اور اردو کے سرکردہ عالم مسعود حسن رضوی مرحوم کہا کرتے تھے کہ رات کو خدا جانے کون لڑکا نیچے گلی میں غالب کا منسوخ کلام گایا کرتا ہے۔ معلوم کرایا گیا تو پتہ چلا کہ وہ لڑکا ان ہی کا بیٹا نیّر تھا، نیّر مسعود رضوی۔ سوچئے کہ جس لڑکے کی نوعمری میں شوخی اس نوعیت کی رہی ہوگی وہ آگے چل کر کیسا خوش ذوق اور ادب فہم نکلا ہوگا۔یہی...
July 21, 2017
چیونٹیوں کو پر نکل آئے

برطانیہ میں ان دنوں گرمی ہےوہ تو ہر سال ہوتی ہے مگراپنے ساتھ ایک سوغات ضرور لاتی ہے، سو طرح کے کیڑے مکوڑے۔ہوا میں ہر طرف ان ذرا ذرا سے بھنگوں سے لے کر موٹے اور توانا بھنوروں تک سب ہی اڑان بھر رہے ہوتے ہیں۔ مکڑیاں خدا جانے کہاں سے نکل آتی ہیں اور کاروں کے شیشوں کے ارد گرد جالے تان لیتی ہیں۔ یہ بڑی بڑی مکھیاں اور بھنورے اڑتے اڑتے...
July 14, 2017
کھیل کو کھیل سمجھ، مشغلہ ٔدل نہ بنا

میں لندن کے علاقے ومبلڈن میں رہتا ہوں۔ وہی ومبلڈن جو ٹینس کے کھیل کی وجہ سے دنیا بھر میں مشہور ہے۔ میرے گھر کے پچھواڑے ایک پارک ہے اور اس سے آگے ٹینس کھیلنے کے میدان ہیں جنہیں کورٹ کہا جاتا ہے حالانکہ ان کا عدالت سے دور کا بھی واسطہ نہیں۔ آس پاس سارا رہائشی علاقہ ہے جس کے بیچوں بیچ لاکھ ڈیڑھ لاکھ لوگ بیٹھ کر ٹینس کے مقابلے دیکھتے...
July 07, 2017
کس کے گھر جائے گا سیلاب بلا

حیران ہوں، برطانیہ میں آباد مسلمانوں کو کیا ہوا؟ ان میں ایک حیرت انگیز تبدیلی آئی ہے۔ یہ اب جیسے ہیں، پہلے تو نہ تھے۔ دہشت گردی کی کھل کر مخالفت کرنے لگے ہیں۔ یہی نہیں، دہشت گردوں کی لاشیں وصول کرنے اور ان کی نماز جنازہ پڑھنے سے انکار کرنے لگے ہیں۔ اور تازہ کمال یہ ہوا کہ لندن کی ایک چوبیس منزلہ عمارت میں آدھی رات کے وقت آگ بھڑک...
June 30, 2017
آگ کیوں لگی، دھماکے کیوں ہوئے

آگ شاید ان گنی چنی چیزوں میں شمار ہو گی جو نہ گورے کالے میں تمیز کرتی ہے، نہ مفلس اور مالدار میں اور نہ مغرب میں اور نہ مشرق میں۔ بس ذرا سا امتیاز برتتی ہے باشعور اور بے شعور لوگوں میں۔ جب پھونکنے پر آجائے تو کہتے ہیں کہ لنکا تک کو پھونک ڈالتی ہے۔ دنیا نے ابھی حال ہی میں آگ کی بے رحمی کی دو ایسی مثالیں دیکھیں جو ایک ٹھکانے پر تو دیر...
June 23, 2017
اوول کے میدان میں کیسا جادو چل گیا

ٹھیک ہے۔ چائے طشتری میں ملی کیونکہ کپ بابا جان لے گئے۔ بھارت کے حصّے میں ٹشو کے ڈبے آئے اور پاکستان میں کامیاب کھلاڑیوں کو لاکھوں نہیں، کروڑوں روپے مل گئے، وہی روپے جو میرے ٹیکس سے کاٹے گئے تھے۔ وہی ٹیکس جو میں یہ آس باندھے دئیے جارہا ہوں کہ ناداروں اور لاچاروں پر خرچ ہو گا۔ جشن اور خوشی منانے کا یہ ڈھنگ نرالا دیکھا۔ غنیمت ہے کہ...
June 16, 2017
یہ کمسن محنت کش، یہ ننھے مزدور

پچھلے دنوںبچّوں کی مشقّت کا عالمی دن منایا گیا۔ یہ دن جب بھی آتا ہے، مجھے کانپور کا قائم رضا شدّت سے یاد آتا ہے۔ اس کا قصہ ذرا دیر بعد۔ پہلے یہ کہہ کر اپنے کرب میں آپ کو شریک کرنا چاہتاہوں کہ ان بچّوں کی حالت دیکھی نہیں جاتی جو کبھی اینٹیں ڈھو رہے ہوتے ہیں اورکبھی اپنے چھوٹے چھوٹے ہاتھوں سے بڑی بڑی مشینوں کی صفائی کررہے ہوتے...
June 09, 2017
اردو کے دیے کی دھیمی پڑتی ہوئی لو

اردو کے بارے میں پہلے ہی عرض کردوں۔ یہ کسی زبان کا نام نہیں، یہ ایک تہذیب کا نام ہے۔ لوگ اسے قومی زبان کہتے ہیں، میں سوچتا ہوں میں اسے قومی تمدن کیوں نہ کہوں،اسے قومی شائستگی کا نام کیوں نہ دوں۔یہ کسی جھگڑے میں پڑنے والی شے نہیں۔ اردو کی خوبی یہی ہے کہ یہ کسی فساد کا سبب بن جائے تو اپنی خوبیاں کھو بیٹھے۔ اب رہ گئے وہ دوسرے لب و لہجے،...
June 02, 2017
وہ جو ہماری بچّی کی خاطر جان سے گئے

پچھلے دنوں ایک عجب واقعہ ہوا۔ واقعہ چھوٹا سا تھا۔ اب تو بڑے بڑے واقعات نے ہم پر اثر کرنا چھوڑدیا ہے۔ ہم پر کچھ گزر جائے تو دو چار روز نڈھال رہتے ہیں۔ اس کے بعد یوں لگتا ہے جیسے کچھ ہواہی نہیں۔ یہی سوچ کر خیال آتا ہے کہ یہ چھوٹا سا واقعہ بیان کروں یا نہیں۔ پھر سوچتا ہوںکہ کسی دور دراز گوشے میں ، کہیں دریاؤں کے پار، پہاڑوں کے پچھواڑے...
May 26, 2017
میرا نام بھی دہشت گردوںمیں لکھا گیا

برطانیہ کے شہر مانچسٹر میں پھر ایک دھماکہ ہوا۔ پھر کوئی سر پھرا ایک پرسکون جھیل میں پتھر پھینک گیا۔ خود جنت کی تمنّاکرتا ہو ا وہ شخص ایک پورے معاشرے کو دوزخ میں دھکیل گیا۔ بائیس نوجوان خاک و خون میں مل گئے۔ ان میں اکثر کی عمر سولہ برس یا اس سے بھی کم تھی۔ شہر کے بہت بڑے ہال میں ایک نوعمر امریکی گلوگارہ اپنی گائیکی سے بچوں کا جی بہلا...
May 19, 2017
برمی گاؤں سے برمنگھم تک

برمنگھم کہنے کو برطانیہ کا شہر ہے مگر قریب سے دیکھیں تو پاکستان کی کسی بستی جیسا نظر آتا ہے۔ گلیاں کی گلیاں اور بازار کے بازار پاکستان اور آزاد کشمیر کے باشندوں سے یوں آباد ہیں کہ ماشاءﷲ کہنے کو جی چاہتا ہے۔ پورے پچاس برس ہوا چاہتے ہیں جب میں پہلے پہل برمنگھم گیا تھا۔ اور کیسا عجب اتفاق ہے کہ پچھلے دنوں ایک بار پھر جانے کا اتفاق...