Advertisement

مجاہدین کشمیر سے

August 28, 2019
 

٭…… تابش صدیقی……٭

مرحبا اے غازیانِ صف شکن

مرحبا اے سرفروشانِ وطن​

تم جہادِ کاشمر کی آبرو

تم سے تابندہ شہیدوں کی آبرو​

تم سے حسنِ حریت کا بانکپن

تم سے زندہ عشقِ ناموسِ وطن​

تم گلستاں کی بہاروں کے نقیب

تم گلوں کی آرزوں کے حبیب​

تم وطن کی ان حسین ماؤں کے خواب

خاکِ پا ہے جن کی رشکِ ماہتاب​

تم نے سر اسلام کا اونچا کیا

اک جہانِ تازہ کی رکھی بنا​

موت کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر

مسکرائے تم ہمیشہ بے خطر​

سرجھکا کر اک بڑے نمرود کا

اک جہاں پر تم نے روشن کردیا​

کفر و نخوت کا ہر کوہِ گراں

بن کے رہ جاتا ہے مورِ ناتواں​

حق نے بخشا بازوئے حیدر تمہیں

فتح کرنا ہے نیا خیبر تمہیں​

وہ نظر آتی ہے منزل دیکھنا

فق ہوا وہ روئے باطل دیکھنا​

نصرتِ حق ہر قدم پر ساتھ ہے

اک قدم، خیبر تمہارے ہاتھ ہے​


مکمل خبر پڑھیں