اسٹاک ایکس چینج، کاروباری ہفتے کے پہلے روز شدید مندی، انڈیکس 420 پوائنٹس کم

بزنس
January 21, 2020

کراچی ( اسٹاف رپورٹر)پاکستان اسٹاک ایکس چینج،ایف اے ٹی ایف کے خدشات اور ایس ای سی پی ،اسٹاک بروکرز تنازع کے باعث نئےکاروباری ہفتے کے پہلے روز شدید مندی ریکارڈ کی گئی ،کے ایس ای100انڈیکس 420پوائنٹس کم ہو کر 43ہزار کی حد سے نیچے آگیا،سرمایہ کاری مالیت 51ارب20کروڑ51لاکھ روپے گھٹ گئی ,75.63فیصد کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی ، کاروباری حجم بھی گزشتہ ٹریڈنگ سیشن کی نسبت 17.74فیصدکم رہا۔پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں گزشتہ روزٹریڈنگ کے آغاز سے ہی گیس کی قیمتوں میں متوقع اضافے کے پیش نظر منفی رجحان دیکھنے میں آیا اور سرمایہ کار حصص خریداری کے بجائے فروخت کو ترجیع دیتے رہے جس کے باعث مارکیٹ مندی کی لپیٹ میں آگئی اوردوران ٹریڈنگ کے ایس ای100انڈیکس43ہزار کی نفسیاتی حد سے گرتے ہوئے42632پوائنٹس کی نچلی سطح پر آ گیا بعد ازاں ریکوری آئی اورانڈیکس کی42700کی حد بحال ہوگئی لیکن مندی کا رجحان غالب رہااورمارکیٹ کے اختتام پر کے ایس ای 100انڈیکس 420.14پوائنٹس کی کمی سے 42747.62پوائنٹس پر بند ہوا۔اسی طرح کے ایس ای 30انڈیکس198.43پوائنٹس کی کمی سے 19798.84پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 189.84پوائنٹس کی کمی سے29808.60 پوائنٹس پر بند ہوا۔گزشتہ روز مجموعی طور پر353 کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا جن میں سے70کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ267میں کمی اور16میں استحکام رہا ۔مندی کے باعث مارکیٹ کے سرمائے میں 51ارب20کروڑ51لاکھ روپے کی کمی ہوئی جس کے نتیجے میں مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ گھٹ کر80کھرب 33ارب93کروڑ25لاکھ روپے ہوگیا۔پیر کو17کروڑ38لاکھ97ہزار شیئرز کا کاروبار ہوا جوجمعہ کی نسبت3کروڑ75لاکھ6ہزار شیئرزکم ہے۔ قیمتوں میں اتار چڑھاؤ کے لحاظ سے کولگیٹ پامولوکے حصص کی قیمت86.33روپے کے اضافے سے بڑھ کر2461.33روپے اورمری پٹرولیم کے حصص75.08روپے کے اضافے سے 1440.26روپے ہوگئی جب کہ سیپ ہائر ٹیکس اور انڈس ڈائنگ کے حصص کی قیمتوں میں باترتیب35.99روپے اور30.05روپے کی کمی ہوئی جس سے سیپ ہائر ٹیکس کے حصص کی قیمت900.01روپے اور انڈس ڈائنگ کے حصص کی قیمت 527ہزارروپے ہوگئی ۔نمایاں کاروباری سرگرمیوں کے لحاظ سے اینگرو فرٹیلائز ر، ٹی آر جی پاک، بینک آف پنجاب،ورلڈ کال ٹیلی کام ،سمٹ بینک ،پاک انٹر بلک ،اینگرو پولیمر ،میپل لیف ،کے الیکٹرک اور فوجی فرٹیلائزر کے شیئرز نمایاں رہے ۔