• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

سالِ نو: ہوائی فائرنگ کرنیوالوں پر اقدمِ قتل کا مقدمہ ہو گا


ملک کے سب سے بڑے شہر کراچی میں سالِ نو کا جشن منانے کے موقع پر شہر بھر میں سخت حفاظتی انتظامات کیے جا رہے ہیں، ہوائی فائرنگ کرنے والوں کے خلاف اقدمِ قتل کی دفعات کے تحت مقدمہ درج ہو گا۔

سالِ نو کے حوالے سے شہر کے ضلع جنوبی میں 2 ہزار 250 پولیس اہلکاروں کی نفری تعینات کی گئی ہے۔

سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس ساؤتھ زبیر نذیر شیخ کے مطابق کراچی کے ضلع جنوبی میں سخت سیکیورٹی اقدامات کو حتمی شکل دے دی گئی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ اس سلسلے میں مجموعی طور پر 2 ہزار 250 پولیس اہلکار مختلف مقامات پر ڈیوٹیاں دیں گے، زیادہ تر انتظامات کلفٹن اور ڈیفنس سب ڈویژن میں کیے گئے ہیں۔

سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس ساؤتھ کے مطابق پولیس سیکیورٹی کو مجموعی طور پر 9 سیکٹرز پر بنایا گیا ہے، سمندر جانے والے راستوں پر 1 ہزار 557 افسران و اہلکار فرائض انجام دیں گے۔

ان کا کہنا ہے کہ سالِ نو کے موقع پر ہوائی فائرنگ کرنے والے عناصر کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی، ہوائی فائرنگ کرنے والوں کے خلاف اقدمِ قتل سمیت دیگر دفعات کے تحت مقدمات درج کیے جائیں گے۔

ایس ایس پی ساؤتھ زبیر نذیر شیخ کے مطابق ڈسٹرکٹ ساؤتھ میں 6 پولیس لائنز ہیں، ان تمام پولیس لائنز سے فائرنگ نہ کرنے کے سرٹیفکیٹ لیے گئے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ کوئی پولیس اہلکار یا اس کا رشتے دار فائرنگ کرتے ہوئے پایا گیا تو اس کے خلاف بھی سخت کارروائی ہوگی۔

ایس ایس پی ساؤتھ کا مزید کہنا ہے کہ مختلف راستوں پر ناکے لگائے جا رہے ہیں، حساس مقامات کی عمارتوں کی چھتوں پر پولیس اہلکار تعینات ہوں گے۔

زبیر نذیر شیخ نے یہ بھی بتایا کہ سی ویو پر ایس ایس یو کے اہلکار بھی تعینات کیے جا رہے ہیں، تمام حساس مقامات پر نفری تعینات کی جا رہی ہے، بغیر سائلنسر کسی موٹر سائیکل کو نہیں چھوڑا جائے گا۔

قومی خبریں سے مزید