آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
بدھ16؍جمادی الاوّل 1440ھ 23؍جنوری 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

شیف فاطمہ علی کا تعلق پاکستان سے ہے انہوں نے پچھلے سال ایک امریکی ٹی وی سیریز ’ٹاپ شیف‘میں اپنی صلاحیتوں کے جوہر دکھائے جس کے بعد وہ ناصرف پاکستان اور امریکا بلکہ پوری دنیا میں مقبول ہوگئیں، لیکن بدقسمتی سے آج فاطمہ کینسر کے مرض میں مبتلا بہادری سے زندگی اور موت کی جنگ لڑ رہی ہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق فاطمہ علی کا شمار پاکستان کی بہترین شیفس میں ہوتا ہے، انہوں نے کئی غیر ملکی مقابلوں کے ٹائٹل اپنے نام کیے۔ اُن کی زندگی کاسب سے بڑا خواب تھا کہ وہ شیف بنیں مگر افسوس کہ ان کی زندگی اُنہیں اس بات کی اجازت نہیں دے رہی کہ وہ اپنا خواب پورا کرسکیں، فاطمہ اب صرف کچھ ہی ماہ کی مہمان رہ گئی ہیں۔


سوشل میڈیا سائٹ انسٹاگرام پر 29 سالہ’ٹاپ شیف‘ اسٹار فاطمہ علی نے اپنی ایک تصویر شیئر کی ہے جس میں وہ اسپتال کے بیڈ پر موجود مسکراتے ہوئے کیمرے کو دیکھ رہی ہیں جبکہ اُن کی چہرے سے ان کی بیماری صاف ظاہر ہورہی ہے۔


فاطمہ علی نے اپنی بیماری سے متعلق انکشاف کرتے ہوئے انسٹاگرام پوسٹ میں لکھا کہ’ وہ جانتی ہیں وہ کافی عرصے کے بعد آج پوسٹ کررہی ہیں لیکن اس کا مقصد اپنے مداحوں کو یہ بتاناہے کہ وہ بیمار ہیں اور بدقسمتی سےوہ مزید بیمار ہورہی ہیں۔ ‘

انہوں نے مزید لکھا کہ ’اب انہیں صرف دعائوں کی ضرورت ہے کیونکہ دوسروں کی دعائیں جلد اثر کرتی ہیں اس لیے سب اُن کے لیےبہت دعا کریں۔ اس کے علاوہ فاطمہ علی نے کہا کہ وہ اُن تمام لوگوں کی بے حد شکر گزار ہیں جنہوں نے ان کے ساتھ اچھا وقت گزارا۔ ‘

آخر میں انہوں نے لکھا کہ’ وہ اپنے تمام مداحوں اور دوستوں کو اپنی صحت سے متعلق آگاہ کرتی رہیں گی۔ ‘

واضح رہے فاطمہ علی کو گزشتہ سال اکتوبر میںشدید جھٹکا اس وقت لگا جب انہیں معلوم ہوا کہ اُن کی ’’ایونگ سارکومہ (Ewing Sarcoma)‘‘ نامی بیماری واپس لوٹ آئی ہے اور اب ان کے پاس صرف ایک سال سے بھی کم کا وقت رہ گیا ہے۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں