آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعرات 20؍ ذوالحجہ 1440ھ 22؍اگست 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پیپلز پارٹی سندھ کے صدرنثار کھوڑو نے کہا ہے کہ جب تک آئین ہے تب تک ملک میں صدارتی نظام نہیں آسکتا۔ آئین کو معطل کرنے کے بعد ہی صدارتی نظام آسکتا ہے۔اگر ملک میں صدارتی نظام آئے گا تو خان صاحب ملک کے وزیراعظم نہیں رہینگے۔

انھوں نے ان خیالات کا اظہار جمعہ کو پی پی پی میڈیا سیل کراچی میں ایک پریس کانفرنس کے دوران کیا۔اس موقع پر وقار مھدی، راشد ربانی، عاجز دھامراہ کے ھمراہ پریس کانفرنس سے خطاب میں کرتے ہوئے کیا۔ںثار کھوڑو نے کہا کہ کیاصدر عارف علوی وزیراعظم عمران خان کو ھٹانا چاھتے ہیں؟ وزیراعظم عمران خان کے اتحادی ان سے بے زار ہو چکے ہیں۔ لگ رہا کے یہ وفاقی حکومت زیادہ وقت نہیں چل سکے گی۔

انھوں نے کہا کہ بلاول بھٹو کو پارٹی کا حادثاتی سربراہ بننے کی باتیں کرنے والے خود حادثاتی طور پر وفاقی حکومت میں آگئے ہیں۔عمران خان کو بھی پی ٹی آئی والدہ سے وراثت میں ملی۔وزیراعظم عمران خان کا بلاول بھٹو کے متعلق صاحبہ کا بیان ان کی گندی سوچ کی عکاسی کرتا ہے۔

وزیراعظم نے ایسی بات کرکے تمام خواتین اور اپنی والدہ کی بھی بے عزتی کی ہے۔عمران خان جو طلاق کے بعد بھی جمائما سے پیسے بٹورتے رہے ہیں۔اور اب دوسروں پر تنقید کر ر ہے ہیں۔جو وزیراعظم بیویاں نہیں سنبھال سکتا اسے نازیبا تنقید زیب نہیں دیتی۔

عوام نے وزیراعظم عمران خان کو اکثریت نہیں دی ہے اس لئے وہ سلیکٹڈ وزیراعظم ہیں۔ریحام خان کی کتاب کے مطابق خان صاحب کے جیب میں کوکین پڑی رہتی ہے۔وزیراعظم عمران خان طالبان اور کالعدم تنظمیوں کے کے حامی ہیں۔

نثار کھوڑو نے کہا کہ عمران خان کی ذھنیت اور سوچ کی مذمت کرتے ہیں۔ جلد ریحام خان کی کتاب سے صفحے  نکالینگے اور جھاز سے وہ  عوام کے لئے پھینکیں گے۔سندھ اسمبلی نے چاروں صوبائی اسمبلیوں سے زیادہ قانون سازی کی ہے۔

پی ٹی آئی ولے سندھ اسمبلی میں عمران خان کی طرح زبان استعمال کرتے ہیں اور ایوان کا ماحول خراب کرتے ہیں۔  پی ٹی آئی کو ھنگامہ کرنے کے علاوہ کچھ نہیں آتا۔آٹھ ماہ میں جتنی تذلیل پی ٹی آئی حکومت کی ہوئی ہے کسی اور کی حکومت کی نہیں ہوئی۔

انھوں نے کہا کہ عوام کی چیخیں نکالنے والوں کی عوام جلد چیخیں نکالیں گے۔مھنگائی کے خلاف عوامی احتجاج بھی جلد ہوگا۔جلسہ کرنے کا ھر جماعت کو حق ہے وہ الگ بات ہے کے کسی کے جلسے سے کسی کی نیندیں حرام ہونگی۔

اس موقع پر ایم کیو ایم کے سابق ایم پی اے مرتضی درانی اور ریٹایرڈ انکم ٹیکس افسر سھیل نقوی نے  پی پی پی سندھ کے صدر نثار کھوڑو کی موجودگی میں پریس کانفرنس میں پیپلز پارٹی میں شامل ہونے کا اعلان کیا۔

نثار کھوڑو نے اس موقع پر کہا کہ مرتضی درانی اور سھیل نقوی کو پیپلز پارٹی میں شامل ہونے پر ویلکم کرتے ہیں۔یہ پارٹی میں فعال اراکین کی طرح کام کرینگے۔

اس موقع پر مرتضیٰ درانی نے کہا کہ پہلے میں پیپلز پارٹی میں تھا بعد میں ایم۔کیو ایم۔میں شامل ہوا اب دوبارہ اپنے گھر واپس آیا ہوں۔ ایم کیو ایم نے تعصب کی وجہ سے شھر کو لاوارث کردیا ہے۔ پیپلز پارٹی بلا تفریق کام کر رہی ہے۔

سہیل نقوی نے کہا کہ سیاست میں خدمت کا عنصر صرف پیپلز پارٹی کے پاس ہے کسی اور جماعت کے پاس نہیں۔پیپلز پارٹی صرف سیاسی جماعت نہیں سیاسی یونیورسٹی ہے۔

نثار کھوڑو نے کہا کہ تعصب کی بنیاد پر کس سیاسی جماعت نے کراچی کو تباہ برباد کیا۔ پیپلز پارٹی ہی ہے جس نے کراچی سے اردو بولنے والوں کو پارٹی اور حکومتی عھدے دئیے ہیں۔

قومی خبریں سے مزید