آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعرات23؍ ربیع الاوّل 1441ھ 21؍نومبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

حسن طلحہ

پیارے بچو! گزشتہ چند صدیوں کے دوران دنیا میں لاتعداد دریافتیں اور ایجادات وجود میں آچکی ہیں، جنہوں نے نہ صرف ہمارے معیارِ زندگی کو بلند کیا بلکہ ہمیں اپنے اردگرد موجود دنیا کو سمجھنے میں مدد بھی فراہم کی- یوں تو ان ایجادات اور دریافتوں کی اہمیت کے اعتبار سے درجہ بندی انتہائی مشکل کام ہے لیکن پھر بھی ہم یہاں چند ایسی ایجادات اور دریافت کا ذکر کر رہے ہیں جنہیں انسانی تاریخ کی سب سے بڑی ایجادات و دریافت قرار دیا جاسکتا ہے-

Penicillin

یہ دنیا کی سب سے پہلی اینٹی بائیوٹک ہے جسے 1928 میں الیگزینڈر فلیمنگ نے دریافت کیا- اگر یہ دوا دریافت نہ ہوتی تو آج بھی لوگ کئی بیماریوں کے ہاتھوں ہلاک ہورہے ہوتے، جن میں معدے کا السر، دانتوں کی بیماریاں اور گلے کے انفیکشن بھی شامل ہیں-


Mechanical Clock

دنیا کی سب سے پہلی مکینیکل گھڑی ایک چینی راہب اور ریاضی دان I-Hsing نے 723 عیسوی میں ایجاد کی-

 اور اسی کی بدولت آپ درست وقت کا تعین کر پاتے ہیں-


Blood Circulation

خون کی گردش کے نظام کی دریافت طب کی دنیا کی اہم ترین دریافتوں میں سے ایک ہے- اس نظام کے حوالے سے مکمل طور پر دنیا کو آگاہ کرنے والے پہلے انسان ولیم ہاروے تھے جنہوں نے 1628 میں خون کی گردش اور اس کی دل اور دماغ تک پہنچنے والی خصوصیات کے بارے میں آگاہ کیا-

Gravity

کششِ ثقل کے قانون سے کون واقف نہیں- کششِ ثقل کی دریافت مشہور ریاضی داں اور ماہر طبعیات آئزک نیوٹن نے اس وقت کی جب 1664 میں ایک درخت کے نیچے بیٹھے ان کے سر پر سیب آگرا- اور اس وقت انہوں نے وضاحت کی چیزیں اوپر سے نیچے کی جانب کیوں آتی ہیں-

Air Conditioning

یوں تو ائیر کنڈیشنگ کا نظام زمانہ قدیم سے موجود ہے لیکن دنیا صرف اس کی جدید شکل سےمتعارف ہے-

بجلی سے چلنے والے ائیر کنڈیشن یونٹ نیویارک سے تعلق رکھنے والے ایک نوجوان انجینئیر Willis Carrier نے 1902 میں ایجاد کیے-


Electricity

بجلی کی ایحاد نے دنیا بھر میں انقلاب برپا کردیا- اور اس ایجاد کا سہرا سائنسدان مائیکل فریڈے کے سر ہے- انہوں نے کئی برقی نظاموں کی دریافت کی-

اس کے علاوہ جنریٹر کی ایجاد بھی مائیکل کا ہی کارنامہ ہے-


DNA

اکثر لوگوں کے خیال میں ڈی این اے 1950 میں ماہر حیاتیات جمیس واٹس اور فرانسس کرک نے دریافت کیا تھا- لیکن حقیقت میں ڈی این اے پہلی مرتبہ 1860 میں ایک سوئس کیمسٹ Friedrich Miescher نے شناخت کیا تھا- اور اسی دریافت نے دوسرے سائنسدانوں کو اس پر تحقیق کرنے میں مدد فراہم کی-

X-Rays

جرمن ماہر طبیعیات ولیم کانراڈ نے 1895 میں ایکسرے کے نظام کو اس وقت دریافت کیا جب وہ برقی رو کو گیس کے انتہائی کم دباؤ سے گزارنے کے حوالے سے مطالعہ کر رہے تھے- انہیں اس دریافت پر 1901 میں طبعیات کے شعبے میں سب سے پہلا نوبل پرائز دیا گیا-