آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
منگل18؍ذوالحجہ 1440ھ20؍اگست 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

ذہنی امراض کے ماہر ڈاکٹر سید ذوالفقار علی رضوی کا کہنا ہے کہ نشے کا بڑھتا ہوا رجحان ذہنی امراض میں اضافہ کا موجب بن رہا ہے۔


نوجوان نسل میں دن بدن نشے کی طرف بڑھتا ہو ا رجحان ذہنی امراض کو بڑھانے کا ذمہ دار ہے، جن میں چرس، افیون، ہیرؤن، بھنگ، کوکین، نشہ آور گولیاں اور ٹیکوں کااستعمال شامل ہے۔

ڈاکٹر سید ذوالفقار علی رضوی نے بتایا کہ منشیات کا استعمال نوجوان نسل کو تباہ کر رہا ہے۔

ڈاکٹر سید ذوالفقار علی رضوی نے کہا کہ دہشت گردی کے بعد دنیا کو سب سے بڑا خطرہ منشیات کے استعمال سے ہے کیونکہ نشے کی وجہ سے نوجوان نسل اپنے فرائض سے غافل ہوتی جا رہی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان بھر میں ریلوے اسٹیشنوں، پارکوں، قبرستانوں اور دیگر مقامات پر لوگ سر عام نشہ کرتے ہیں، مگر انہیں کوئی پوچھنے والا نہیں، 18سال سے کم عمر کے نوجوانوں کے سگریٹ پینے اور خریدنے پر سختی سے عملدر آمد ہونا چاہیے۔

ان کاکہنا تھا کہ دنیا کے کئی ممالک میں منشیات کے خلاف قانون سازی کی گئی ہے جبکہ پاکستان میں بھی قانون موجود ہے لیکن اس پر عملدر آمد کی اشد ضرورت ہے۔

صحت سے مزید
ویڈیو رپورٹس سے مزید