آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعرات 14؍ربیع الثانی 1441ھ 12؍دسمبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

اوور سیز پاکستانیوں کے منجمد بینک اکاؤنٹس کی تصدیق کا نیا نظام متعارف

اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کے بینک اکاؤنٹس کی تصدیق میں درپیش مشکلات کےحل کے لیے متبادل ہدایات جاری کردی ہیں، جس کے بعد ایسے تمام افراد جو بائیو میٹرک تصدیق کے لیے ملک میں موجود نہیں وہ دیگر دستاویزات آن لائن جمع کروا کر پاکستان میں موجود اپنے اکاؤنٹس کی تصدیق کرواسکتے ہیں۔ذرائع کے مطابق یہ متبادل انتظام نوکری کی غرض سے ملک سے باہر مقیم پاکستانیوں کو رقم کی منتقلی اور ملک میں ان کے بینک اکاؤنٹ کی معطلی کے حوالے سے موصول شکایات کو مدنظر رکھتے ہوئے کیا گیا ہے۔ 

اسٹیٹ بینک نے اس حوالے سے تمام بینکوں کو ہدایات بھی جاری کر دی ہیں۔بینک دولت پاکستان کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے کے مطابق مذکورہ متبادل نظام کے تحت بیرون ملک مقیم خواتین و حضرات اپنے متعلقہ بینک سے بذریعہ ای میل/عام ڈاک رابطہ کرکے اپنی شناختی دستاویزات (پاسپورٹ، ویزا، شناختی کارڈ) فراہم کریں۔ان دستاویزات کو بائیومیٹرک تصدیق کے متبادل کے طور پر استعمال کیا جائے گا۔ 

اکاؤنٹ کی تصدیق کے بعد بیرون ملک مقیم پاکستانی اپنے بینک اکاؤنٹ کو بنا کسی روک ٹوک استعمال کرسکیں گے۔اس حوالے سے اسٹیٹ بینک نے تصدیق کی شرائط اور ضابطہ کار بھی واضح کردیا ہے جس کے تحت بینک اکاؤنٹ ہولڈرز کو تین درجات میں تقسیم کیا گیا ہے، غیر مقیم پاکستانی، عارضی طور پر باہر مقیم پاکستانی اور مشترکہ اکاؤنٹ ہولڈرز۔

ڈائریکٹر اسٹیٹ بینک محمد اختر جاوید کی طرف سے فراہم کردہ تفصیلات کے مطابق غیر مقیم پاکستانیوں کو بینک اکاؤنٹ کی تصدیق کے لیے مندرجہ ذیل دستاویزات بھجوانا ہوں گی۔

1۔ صارف کےغیر مقیم پاکستانی ہونے کی تصدیق بذریعہ موثر پاسپورٹ، ویزا، رہائشی پرمٹ یا دیگر مصدقہ دستاویزات

2۔ شناختی کارڈ یا نائکوپ کی کاپی

3۔ متعلقہ بینک کا اکاؤنٹ نمبر

4۔ صارف کی جانب سے رہائشی اسٹیٹس تبدیل ہونے کی صورت میں بینک کو مطلع کرنے کا تصدیق نامہ

فراہم کردہ معلومات کو مدنظر رکھتے ہوئے مجوزہ بینک نادرا کے ذریعے تصدیق کرے گا۔

وہ تمام افراد جو بیرون ملک مقیم پاکستانی تو نہیں مگر عارضی طور پر ملک سے باہر رہائش پذیر ہیں انہیں ملک میں نہ ہونے کا قابل قبول ثبوت فراہم کرنا ہوگا۔ معلومات کی فراہمی کے بعد متعلقہ بینک نادرا کے سسٹم کے ذریعے تصدیق کا عمل مکمل کرے گا جو بائیو میٹرک تصدیق کا متبادل ہوگا۔

یہاں یہ بات قابلِ ذکر ہے کہ متبادل تصدیق کا یہ عمل صرف اس وقت تک قابلِ عمل ہوگا جب تک صارف ملک سے باہر ہے، ملک واپسی کی صورت میں صارف کو فوری طور پر بائیو میٹرک تصدیق کروانا ہوگی۔

مشترکہ اکاؤنٹ کی صورت میں پاکستان میں مقیم شہری کی بائیو میٹرک تصدیق کی جائے گی جبکہ ملک سے باہر مقیم شہری کی رہائشی صورت کو مدنظر رکھتے ہوئے مندرجہ بالا طریقے سے متبادل تصدیق کی جائے گی۔اسٹیٹ بینک کی جانب سے اینٹی منی لانڈرنگ اور کاؤنٹر فائنانسنگ آف ٹیررازم کے سلسلے میں کیے گئے اقدامات کے تحت تمام بینک اکاؤنٹس کی بائیو میٹرک تصدیق لازم قرار دی گئی ہے اور تصدیق نہ کروانے کی صورت میں اکاؤنٹ معطل کیا جا رہا ہے۔ 

تاہم ملازمت کی غرض سے ملک سے باہر مقیم پاکستانیوںکو اس حوالے سے مشکلات درپیش آرہی تھیں کیونکہ ملک میں موجود نہ ہونے کی وجہ سے ان کے اکاؤنٹ معطل ہورہے تھے اور انہیں پاکستان رقم بھیجنے میں بھی مشکلات کا سامنا ہے۔ بینک دولت پاکستان کا متبادل نظام ملک سے باہر مقیم پاکستانیوں کی مشکلات میں آسانی پیداکرے گا۔

بلادی سے مزید