آپ آف لائن ہیں
بدھ5؍ صفر المظفّر 1442ھ23؍ستمبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

بھارت میں مسلمانوں پر مظالم پر صدر مملکت کا رد عمل

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی جانب سے ٹوئٹ کی گئی ویڈیو 


صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا بھارت میں جاری مسلمانوں پر مظالم سے متعلق کہنا ہے کہ مودی حکومت ہندوتوا کے ظالمانہ نظریے کو استعمال کرتے ہوئے بھارتی مسلمانوں کے خلاف جنگ کر رہی ہے۔

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر گزشتہ روز ایک بھارتی لڑکی کی ویڈیو شئیر کرتے ہوئے لکھا کہ ’ اب تک بھارت سے ہزاروں پیغامات موصول ہو چکے ہیں جس میں سے ایک پیغام کو ٹوئٹ کے ذریعے شیئر کر رہا ہے ہوں۔‘

صدر عارف علوی کی جانب سے شیئر کیے گئے ٹوئٹ میں ایک بھارتی مسلمان لڑکی روتے ہوئے نئی دہلی کی جامعہ ملیہ یونیورسٹی کے اندر بھارتی پولیس کا لڑکیوں پر بہیمانہ تشدد کے حوالے سے بتا رہی ہے، لڑکی کا ویڈیو میں کہنا ہے کہ امام مسجد کے مطابق بھارتی پولیس نے مسجد میں گھس کر لڑکیوں پر بے انتہا ظلم کیا ہے اور انہیں مارا پیٹا ہے، لڑکیوں کے پاؤں پر اتنی لاٹھیاں ماری ہیں کہ ان کے دونوں پاؤں ٹوٹ گئے ہیں۔ بھارتی پولیس کی جانب سے امام صاحب کو بھی لاٹھی چارج کا نشانہ بنایا گیا۔‘


واضح رہے کہ بھارت کی ہندو انتہا پسند حکمران جماعت بی جے پی نے رواں سال کو مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت سے متعلق آئین کا آرٹیکل 370 اور 35 اے ختم کر کے کشمیر کو دنیا کی سب سے بڑی جیل میں تبدیل کر دیا تھا بعدازاں شہریت کا متنازع بل کو لوک سبھا اور راجیہ سبھا سے منظور کروانے کے بعد اسے قانون کا درجہ دے دیا جس کے تحت پاکستان، افغانستان اور بنگلا دیش سے آنے والے غیر مسلم تارکین کو شہریت دی جائے گی لیکن مسلمانوں کو شہریت نہیں دی جائے گی۔

بھارت کی جانب سے شہریت سے متعلق متنازع بل کے خلاف آسام اور مدھیہ پردیش سمیت 6 ریاستوں نے اس قانون کو لاگو کرنے سے انکار کر دیا ہے اور مختلف شہروں میں بڑے پیمانے پر مظاہرے بھی کیے جا رہے ہیں جس میں اب تک 6 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہو چکے ہیں۔

قومی خبریں سے مزید