آپ آف لائن ہیں
پیر12؍شعبان المعظم 1441ھ 6؍اپریل 2020ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

رنگ سانولا کرنے کیلئے بہت جتن کیے: شنیرا اکرم

سابق  کرکٹر وسیم اکرم کی اہلیہ شنیرا اکرم کا کہنا ہے کہ انہوں نے اپنا رنگ سانولا کرنے کے لیے بہت جتن کیے ہیں۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹاگرام پر شنیرا کی جانب سے شیئر کردہ ایک تفصیلی پیغام میں گورا رنگ رکھنے کی شوقین لڑکیوں کو مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ آپ جیسا سانولا یا گندمی رنگ رکھنے کی شوقین دنیا میں مجھ سمیت ہزاروں خواتین ہیں۔

View this post on Instagram

To all the girls with brown skin wishing they had white, I just want to let you know that there are a hell of a lot of white girls who grew up wishing they had dark skin too, I know I was one of them. We thought that if our skin was brown we looked healthier, prettier and more attractive to boys. We would go to any length to change the colour of white to brown because that what what was instilled in our minds, that brown was more beautiful. When I was growing up we rubbed harmful oil on our faces and bodies and lay out all day in the harsh UV sun and burn to a crisp, just so that in 3-4 days the red and extremely painful burn would die down and eventually we would have a brown tan! We would also spend hours lying in a solarium which is fake sunlight machine risking skin cancers, skin disease, spots and adding years to our faces causing wrinkles and irreversible damage. And when the sun wasn’t available we would also rub toxic stains and dyes in to our skin everyday to give our skin a 3-5 shades darker sun kissed brown look. We would spend incredible amounts of money to have brown body paint sprayed on our body every week that gets in our hair, clothes and bedsheets, a body paint that is almost like a stain on our skin that doesn’t wash off for days and when it eventually wore off it would leave our skin patchy, streaky and scaley. And I have never tried this but some girls have synthetic hormones injected in to their bodies to stimulate the pigment cells that produce melanin and actually change the colour of the skin from white to brown permanently. What I’m trying to say is Don’t try and change who you are, be happy underneath your skin, your beauty is interpreted by you, you are beautiful no matter what your skin colour is!! And just remember, to all the girls with brown skin who want white, you are the envy of half the women on this planet, women and girls all over the world that go to any extremes to have your colour skin, so that’s got to be something worth enjoying !!! #BeYourself #LoveYourself #TheGrassIsNotAlwaysGreener #BeautyIsOnTheInside #NeverJudgeByTheColourOfOnesSkin #WeAllStruggleToFindOurSelvesBeautiful #WhoCaresWhatOurSkinLooksLike

A post shared by Shaniera Akram (@iamshaniera) on


انہوں نے اپنے پیغام کے آغاز میں اُن تمام لڑکیوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر میں ہزاروں لڑکیاں یہ خواہش رکھتی ہیں کہ وہ گندمی رنگت کی مالک ہوتیں ، میرا شمار بھی ایسی ہی لڑکیوں میں ہوتا تھا۔

انہوں نے بتایا کہ نوجوانی میں انہوں نے اپنا رنگ سانولا کرنے کے لیے بہت جتن کئے، ہمارے ذہن میں یہی بات ڈالی گئی تھی گندمی رنگت زیادہ پُرکشش ہوتی ہے، اسی رنگت کو حاصل کرنے کی کوشش میں ہم تین سے چار گھنٹے تک دھوپ میں بیٹھتے تھے۔

شنیرا نے یہ بھی بتایا کہ ہم اپنی نوجوانی کے دور میں اپنے چہرے اور جسموں پر نقصان دہ تیل لگاتے تھے  جو اسکن کینسر ، جلدی بیماریوں، جھریوں کا باعث بن سکتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ اگر سورج کی روشنی دستیاب نہ ہوتی تو ہم اپنے فیس پر ڈائی رگڑتے تا کہ چہرہ سانولا لگے۔

اپنے پیغام کے آخر میں سانولی رنگت کی حامل لڑکیوں کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے کہا کہ اُن کے اس پیغام کا مقصد یہی ہے کہ گندمی رنگ والی لڑکیاں اپنا رنگ گورا کرنے کی کوششیں کرکے خود کو تبدیل نہ کریں آپ جیسی ہیں اسی کے ساتھ خوش رہیں، دنیا میں کتنی ہی لڑکیاں ایسی ہیں جو آپ جیسی بننے کی خواہشمند ہیں۔

خاص رپورٹ سے مزید