آپ آف لائن ہیں
ہفتہ14؍شوال المکرم 1441ھ6؍جون 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

لاک ڈاؤن کورونا سے لڑنے کا حل نہیں، ڈبلیو ایچ او


عالمی ادارۂ صحت کے ڈائریکٹر جنرل ٹیڈروس اذانوم گھبریائسس کا کہنا ہے کہ عالمی وبا کورونا وائرس سے ممالک میں لاک ڈاؤن کا آپشن استعمال کیا جا رہا ہے جو اس کا حل نہیں ہے ۔

ٹیڈروس اذانوم گھبریائسس نے مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ایک ویڈیو بیان میں کہا ہے کہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے اور اس کے خاتمے کے لیے دنیا بھر کے ممالک میں لاک ڈاؤن کیا جا رہا ہے مگر یہ ان کا اپنا فیصلہ ہے، لاک ڈاؤن کورونا کو ختم کرنے کا سبب نہیں بن سکتا، یہ کورونا پر الٹا اٹیک کر کے اس سے لڑنے کا وقت ہے ۔

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے ہیڈ کوارٹر جنیوا میں میڈیا سے گفتگو کے دوران ٹیڈروس اذانوم گھبریائسس نے مزید کہا کہ اس وبا سے لڑنے کے لیے کوئی راستہ اپنائیں، جیسے کہ سخت اقدامات عمل میں لائیں، بر وقت   ٹیسٹ کرنا مریض کو قرنطینہ کرنا اور اس کا علاج کرنا ہی اس کا بہتر حل ثابت ہو سکتا ہے، لاک ڈاؤن کا آپشن صرف ان ممالک کے لیے کار آمد ہے جن کے صحت کے محکمات کمزور اور صحت کا مضبوط نظام موجود نہیں ہے۔

سخت معاشرتی اور معاشی پابندیوں کا لگانا بہترین اور تیز ترین راستہ نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت اپنی عوام میں یہ آگاہی پھیلائیں کہ وہ اس سے کیسے بچ سکتے ہیں ،اس سے بچاؤ کے طریقے موجود ہیں اور بچاؤ کے لیے طبی سامان بھی، عوام میں اپنی صحت کی دیکھ بھال اور صحت عامہ کی تربیت بڑھانے کی ضرورت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ایسے وقت میں عوام میں شعور اجاگر کرنے کی ضرورت ہے کہ اس کا علاج ابتدائی دنوں میں تشخیص کے بعد ہو سکتا ہے، معمولی علامات میں ہی ڈاکٹر کے پاس جائیں تاکہ اس کا علاج کیا جا سکے اور یہ دوسروں میں نہ پھیلے، اس سے متعلق بچاؤ کی تدابیر کرنا لازمی ہے ۔

صحت سے مزید