آپ آف لائن ہیں
جمعرات24؍ذیقعد 1441ھ16؍جولائی2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

ڈر ہےکہیں سرکاری اسپتال کورونا کے پھیلاؤ کا سبب نہ بن جائیں، ڈاکٹر ذیشان


گرینڈ ہیلتھ الائینس کے ڈاکٹر ذیشان کا کہنا ہے کہ  سرکاری اسپتالوں کے لیے ابھی تک کسی نے کچھ نہیں کیا، ہمیں ڈر ہےکہیں سرکاری اسپتال کورونا کے پھیلاؤ کا سبب نہ بن جائیں۔

گرینڈ ہیلتھ الائینس کے ڈاکٹر ذیشان نے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ لاک ڈاؤن کو دو ماہ ہوگئےاور ابھی تک صرف 750 این 95 ماسک ملے ہیں۔

ڈاکٹرذیشان نے کہا کہ ہمیں اپنے لیے ماسک نہیں چاہئیں بلکہ مریضوں کی احتیاط زیادہ ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے کورونا سے جاں بحق افراد کے لیے ایس او پی نہیں بنائے۔

اُن کا کہنا ہے کہ سرکاری اسپتالوں کے لیے ابھی تک کسی نے کچھ نہیں کیا، حکومت مریضوں کی زندگی بچانے کے لیے حفاظتی انتظامات پورےکرے۔

ڈاکٹر ذیشان کا کہنا ہے کہ آڈٹ کے ڈر سےاسپتال انتظامیہ کسی قسم کی خریداری کرنے سے قاصر ہے، سانس کی تکلیف میں مبتلا ہر مریض کو شک کی نظر سے دیکھا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم معاوضہ بڑھانے کا مطالبہ نہیں کرتے لیکن تضحیک بھی نہ کی جائے۔ عوام سےاپیل ہے کورونا سے بچاؤ کے لیے صرف اور صرف احتیاط کی جائے۔

میڈیا سے گفتگو میں ڈاکٹر ذیشان نے مزید کہا کہ 2100 ڈاکٹر، نرسز اور طبی عملے کو صرف ایک مرتبہ حفاظتی سامان ملا ہے، آج بھی 25 ہیلتھ ورکرز قرنطینہ میں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پی آئی سی میں کورونا وبا کی وجہ سے مسائل کو سامنے لانا چاہتے ہیں، پنجاب کےسب سےزیادہ 48 ہیلتھ ورکرزپی آئی سی کے متاثر ہوئے ہیں۔ پی آئی سی سے دوسرے اسپتال منتقل کیے گئے12مریض کورونا کے باعث جاں بحق ہوگئے۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب کے سب سے بڑے امراض قلب کے اسپتال کا بھی کوئی پرسان حال نہیں ہے۔

صحت سے مزید