آپ آف لائن ہیں
جمعہ29؍محرم الحرام 1442ھ 18؍ستمبر2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

اسٹیٹ بنک اسکیم ، 6کھرب 36ارب 76کروڑ کے قرضے ایک سال کیلئے موخر

اسلام آباد (اے پی پی)کورونا وائرس کی وباءسے نمٹنے کی کوششوں کے ضمن میں اسٹیٹ بنک کے قرضہ موخرو ری شیڈول کرنے کی اسکیم کے تحت اب تک6 کھرب، 36 ارب ،76کروڑ، 70 لاکھ روپے مالیت کے قرضوں کو ایک سال کیلئے موخرکیا گیا ہے۔قرض کا اصل زر موخر کرنے کی مشروط اجازت ،قرض ادائیگی موخر کرنے پر بینک کوئی فیس یا سود چارج نہیں کریں گے،ا سٹیٹ بنک کی جانب سے اس حوالہ سے جاری اعداد وشمارکے مطابق اصل زر کی ادائیگی ایک سال کیلئے موخرکرنے کی سکیم کے تحت 30 جولائی تک سٹیٹ بنک کو 12لاکھ ، 95 ہزار 821 درخواستیں موصول ہوئی جن کے ذمہ واجب الاداقرضہ کا حجم 24 کھرب 90 کروڑ روپے سے زیادہ ہے، ان میں سے12لاکھ 32 ہزار، 480 درخواستوں کی منظوری دی گئی ہے اور6 کھرب، 36 ارب ،76کروڑ، 70 لاکھ روپے مالیت کے قرضوں کو ایک سال کیلئے موخرکردیا گیا۔ اسی طرح اس سکیم کے تحت ایک کھرب ،63 ارب 93 کروڑِ روپے سے زائد کے قرضوں کی ری سٹرکچرنگ/ ری شیڈولنگ کی منظوری دی گئی ہے۔اس سکیم کے تحت صارف قرض کا اصل زر ایک سال موخر کرنے کی مشروط اجازت دے دی گئی ہے۔ یہ سہولت ان صارفین

کےلئے ہیں جن کی ادائیگی 31 دسمبر تک باقاعدہ ہوں ہو،قرض ادائیگی موخر کرنے پر بینک کوئی فیس یا سود چارج نہیں کریں گے۔ بینکس اس دوران صرف سود یا منافع کی وصولی کر سکیں گے،جو صارفین سود یا منافع کی رقم ادا نہ کرسکیں وہ ری سٹرکچر نگ کی درخواست کرسکتے ہیں۔ قرضوں کو موخر یا ری شیڈول کرنے سے کریڈٹ ہسٹری متاثر نہیں ہوگی۔

اہم خبریں سے مزید