آپ آف لائن ہیں
منگل9؍ربیع الاوّل 1442ھ 27؍اکتوبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

وزیر اعظم کے تعمیراتی پیکیج کے نفاذ کو رکاوٹوں کا سامنا

اسلام آباد (فخر درانی) پانچ بین الاقوامی ہوائی اڈوں کے آس پاس ہاؤسنگ ٹاؤئز اور عمارتوں کی اونچائی کے لیے سول ایوی ایشن اتھارٹی (سی اے اے) سے نو آبجیکشن سرٹیفیکٹ(این اوسی) کے خاتمے سے متعلق وفاقی کابینہ کے فیصلے کے نفاذ میں دو بڑی رکاوٹیں ہیں۔ دی نیوز کو دستیاب دستاویز کے مطابق پہلی یہ کہ سی اے اے کو ابھی اپنے رول 68میں ترمیم کرنا ہے۔ اس نے مجاز اتھارٹی کو اس بارے میں ایک تجویز پیش کی ہے۔ دوسرا یہ کہ سی اے اے کو ابھی بھی راولپنڈی، اسلام آباد، کراچی، لاہور، پشاور اور ملتان کے اس ترقیاتی دائرہ کار کا تعین اور آگاہی کرنا ہے جس میں عمارتیں تعمیر کی جاسکتی ہیں۔ حکام نے بھی اس کی تصدیق کی ہے۔ بلڈرز اور تعمیراتی صنعت کے لئے اپنے پیکیج کے ذریعے معاشی سرگرمیوں کو فروغ دینے کیلئے وزیر اعظم عمران خان نے ہدایت کی ہے کہ سرمایہ کاروں کو متعدد محکموں سے متعدد این او سی مانگنے کے لئے غیر ضروری رکاوٹوں کا نشانہ نہ بنایا جائے جن سے منصوبوں میں تاخیر ہورہی ہے۔ ان ہوائی اڈوں کے آس پاس عمارتوں کے لئے اونچائی کے معیار کے موضوع پر 23 ستمبر 2020 کو سی اے اے کے خط سے جس تیزی سے سرکاری کاروبار آگے بڑھتا ہے اس کا ثبوت ملتا ہے۔

اہم خبریں سے مزید