آپ آف لائن ہیں
منگل7؍رمضان المبارک 1442ھ 20؍اپریل2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

پاک بھارت تعلقات میں جنگ بندی سے متعلق اہم پیشرفت

پاکستان اور بھارت کے ڈائریکٹر جنرل ملٹری آپریشنز نے ہاٹ لائن پر رابطہ کرکے کنٹرول لائن اور دیگر سیکٹرز پر جنگ بندی سے متعلق تمام معاہدوں اور سمجھوتوں پر سختی سے عمل پیرا ہونے کا اعادہ کیا ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق پاک بھارت تعلقات میں اہم پیشرفت سامنے آئی ہے، ہاٹ لائن پر رابطے میں دونوں اطراف سے دیرپا اور باہمی مفادِ امن کی خاطر کور ایشوز اور تحفظات کو حل کرنے، ہاٹ لائن رابطے اور بارڈر فلیگ میٹنگز کے موجودہ نظام کے ذریعے کسی بھی غیر متوقع صورتحال اور غلط فہمی کو حل کرنے پر اتفاق کیا گیا ہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ پاک بھارت ڈی جی ایم اوز کی بات چیت اچھے ماحول میں ہوئی، کنٹرول لائن سمیت تمام سیکٹرز کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا اور ایل او سی اور دیگر تمام سیکٹرز کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق ڈی جی ایم اوز نے بنیادی معاملات اور خدشات حل کرنے پر اتفاق کیا، پاکستان اور بھارت متفق ہیں کہ ہاٹ لائن کے موجودہ مکینزم کو موثر بنایا جائے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے بتایا کہ پاکستان اور بھارت میں رابطہ 1987 ء سے جاری ہے، ایل او سی پرجنگ بندی کےلیے 2003 ء میں ایک اور انڈراسٹینڈنگ ہوئی، 2014 ء سے ایل او سی پر جنگ بندی کی خلاف ورزیوں میں تیزی آگئی تھی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق 2003 ءکے بعد سے اب تک 13ہزار 500 سے زائد سیز فائرخلاف ورزیاں ہوئیں، جس میں 310 شہری جاں بحق 1600 کے قریب زخمی ہوئے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے بتایا کہ 2014 ءسے 2021 ء کے درمیان 97 فیصد سیز فائرخلاف ورزیاں ہوئیں،جبکہ 2019 ء میں سب سے زیادہ سیز فائر خلا ف ورزیاں ہوئیں۔

آئی ایس پی آر کے مطابق 2018 ء میں سیز فائرخلاف ورزیوں سے سب سے زیادہ جانی نقصان ہوا۔

قومی خبریں سے مزید