• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

علی زیدی کا KPT کا دورہ، افسران پر سیخ پا ہوگئے

وفاقی وزیر بحری امور علی حیدر زیدی کراچی پورٹ ٹرسٹ (کے پی ٹی) میں تین سال سے پل بند کرنے پر کے پی ٹی افسران پر سیخ پا ہوگئے، بولے پانچ فٹ کا سوراخ بند کرنے میں 3 سال کیوں لگے۔ان کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ نوٹس لے اور وزیر کو لوگوں کو معطل کرنے کا اختیارات دئیے جائیں۔

وفاقی وزیر علی زیدی نے کراچی میں کے پی ٹی کا دورہ کیا انہوں نے کے پی ٹی افسران پر برہمی کا اظہار کیا اور تین سال سے بند پل کی وجوہات طلب کرلیں۔

میڈیا سے بات کرتے ہوئے علی زیدی کا کہنا تھا کہ کے پی ٹی اور پورٹ قاسم کے پی آر ڈپارٹمنٹ کا 35 لاکھ روپےبجٹ ہے، لوگ اسٹے پر یہاں بیٹھے ہیں اور کام کرنے کی عادت نہیں، نئے چیئرمین کے آنے کے بعد پانچ ماہ میں یہ پل بن گیا۔

وفاقی وزیر علی زیدی نے سسٹم کے کمزور ہونے کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ میری وزارت میں کچھ کام ہوتے ہیں کچھ نہیں ، بہت سے اداروں سے این او سی ملتی ہے تو جا کر کام ہوتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ 18ویں ترمیم پیپلزپارٹی نے کروائی تھی، مرتضی وہاب بتائیں کہ دو سال میں فشریز کا کرایا کتنا دیا ،جبکہ ساحل سے 12 ناٹیکل مائل تک زمین صوبے کے پاس ہے۔

علی زیدی کا کہنا تھا ماحولیات کا محکمہ بھی سندھ کے پاس ہے، ساڑھے 500 ملین گندا پانی روز سمندر میں ڈال رہے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ کسی کو برا لگے یا اچھا میں کے پی ٹی کی زمینوں کو دیکھوں گا، کے پی ٹی کے لینڈ پر ٹیکنالوجی سٹی بناؤ ں گا۔

قومی خبریں سے مزید