• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

ٹیکنالوجی اور یونیورسٹی آف سیالکوٹ نےمفاہمت کی یاداشت پر دستخط

پشاور (خصوصی نامہ نگار) یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی پشاوراور یونیورسٹی آف سیالکوٹ نےمفاہمت کی یاداشت پر دستخط کر دیئے، انجینئرنگ یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار حسین اور یونیورسٹی آف سیالکوٹ کے پرووائس چانسلر ڈاکٹر ندیم احمد چوہدری نے ایم او یو پر دستخط کئے۔ پروفیسر ڈاکٹر سحر نور ڈین فیکلٹی آف میکینکل انجینئرنگ ، پروفیسر ڈاکٹر سید ریاض اکبر شاہ ڈائریکٹر ٹی آئی سی، پروفیسر ڈاکٹر ضیاء الحق چیئرمین شعبہ ایگریکلچرل انجینئرنگ ، پروفیسر ڈاکٹر سعید گل ڈائریکٹر کیریئر ڈویلپمنٹ سنٹر ، ڈاکٹر طارق محمود خلیل منیجر او ریک اور دونوں یونیورسٹیوں کے سینئر حکام بھی موجود تھے۔ معاہدےکا مقصد دونوں اداروں کے درمیان تحقیق و ترقی اور انجینئرنگ کے شعبوں سمیت یونیورسٹی ٹو یونیورسٹی پارٹنرشپ کو فروغ دینا ہے۔پروفیسر ڈاکٹر افتخار حسین نے اس موقع پر اپنے خطاب میں کہا کہ موجودہ دور میں جدید صنعتی ترقی کے لئے باہمی تعاون ناگزیر ہے، معاشرے کے مسائل کے حل کیلئے جامعات کے محققین اور پریکٹیشنرز کے مابین باہمی روابط لازمی ہیں، معاہدے کے تحت یو ای ٹی کے محققین اور فیکلٹی سیالکوٹ یونیورسٹی کے ساتھ آر اینڈ ڈی پروگراموں میں معاونت کریں گےاوریک آفس یونیورسٹی آف سیالکوٹ کےاوریک آفس کیساتھ تعاون کرے گا اور یونیورسٹی آف سیالکوٹ کے فیکلٹی اور طلبہ کو لیبارٹریوں میں مشترکہ تحقیقی کام کے لئے ایک پلیٹ فارم مہیا کرے گا ۔یونیورسٹی آف سیالکوٹ کے پرو وائس چانسلر ڈاکٹر ندیم احمد چوہدری نے کہا کہ معاہدے سے دونوں جامعات کےدرمیان تعاون کو فروغ ملے گاجس سے مقامی صنعت کے ساتھ روابط مضبوط ہوں گے، انجینئرنگ کے شعبوں میں مشترکہ تحقیقی منصوبے بھی شروع کئے جائیں گےجبکہ یو ای ٹی پشاور کی بہترین فیکلٹی اور جدید ترین لیبارٹریوں سے استفادہ حاصل کرکے مقامی مسائل کاحل تلاش کیا جائے گا۔ انہوں نے انجینئرنگ یونیورسٹی کے آرٹیفیشل انٹیلی جنس سنٹر (اے آئی ) سے بھی استفادہ حاصل کرنے کا اعادہ کیا۔ڈاکٹر نصرو من اللہ نے کہا کہ یو ای ٹی پشاور یونیورسٹی آف سیالکوٹ کے اساتذہ اور طلبہ کو نیشنل آئیڈیاز بینک میں حصہ لینے میں مدد دے گی جس کے لئے یو ای ٹی پشاور ریجن کا مرکز ہوگی۔
پشاور سے مزید