• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

ہانی بلوچ طبیعت کی خرابی کے باعث اس جہان فانی سے کوچ کر گئیں ،بی ایس او

کوئٹہ (آن لائن)بلوچ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے مرکزی ترجمان نے تنظیمی ساتھی اور سردار بہادر خان وومن یونیورسٹی میں انگلش لٹریچر کی اسٹوڈنٹ بانک ہانی بلوچ کی 24 ستمبر کی شام انتقال پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ اس خبر سے بی ایس او سمیت تمام طلبا ء کو صدمہ اور دکھ پہنچا ہے۔ یہاں جاری بیان میں انہوں نے کہاکہ ہانی بلوچ طلبہ سیاست میں انتہائی اہم کردار ادا کر رہی تھیں۔ بالخصوص پاکستان میڈیکل کمیشن کے خلاف جاری طلباء کی تحریک کو منظم کرنے میں ان کا کلیدی کردار تھا۔ 23 ستمبر کی گرینڈ ریلی میں وہ فرنٹ لائن پر متحرک نظر آئیں اور ساتھیوں کا حوصلہ بڑھاتی رہیں۔مرکزی ترجمان نے وضاحت دی کہ بانک ہانی بلوچ کی طبیعت پہلے سے ناساز تھی، مگر جدوجہد کو اولیت دیتے ہوئے انہوں نے اپنی صحت کی پرواہ کیے بغیر ریلی میں متحرک رہیں۔ شام کے وقت جب ساتھیوں نے انکی طبیعت زیادہ خراب پائی تو انہیں زور دے کر گھر بھیج دیا۔ جس کے بعد رات گئے پولیس کی لاٹھی چارج اور گرفتاریاں ہوئیں۔ جس سے متحرک ساتھیوں کا قید ہونے سے ہانی بلوچ سے دوبارہ رابطہ منقطع ہوا اور کل ساتھی جب رہا ہو کر واپس آئے ہیں تو انہوں نے ایک دوسرے کی خبر دریافت کی ہے جس سے یہ دردناک خبر سامنے آئی ہے کہ ھانی بلوچ طبیعت کی زیادہ خرابی کی وجہ سے اس جہاں سے کوچ کر گئی ہیں۔بانک ھانی کی ناگہانی وفات سے طلباء حالت سوگ میں ہیں۔ مگر انکے مشن کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کیلئے ساتھی پرعزم ہیں۔ وہ طلبہ تحریک کی نڈر رہنما تھیں، ہم انہیں انکی راجی خدمات پر سرخ سلام پیش کرتے ہیں۔ 
کوئٹہ سے مزید