• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

امریکا اور چین کا تائیوان معاہدے کی پاسداری پر اتفاق، چین کے ساتھ تائی پے کی کشیدگی برقرار

واشنگٹن (جنگ نیوز )امریکی صدر جو بائیڈن کا کہنا ہے صدر شی جن پنگ نے تائیوان سے متعلق معاہدے کی پاسداری کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔ادھر تائیوان کے وزیر دفاع شیو کواؤ چینگ نے بدھ کے روز اپنے ایک بیان میں کہا کہ بیجنگ کے ساتھ فی الوقت گزشتہ 40 برسوں کے دوران کی سب سے بد ترین کشیدگی پائی جاتی ہے۔انہوں نے خبردار کیا کہ چین کے پاس 2025 تک مکمل پیمانے پر حملہ کرنے کی صلاحیت موجود ہو گی۔ تائیوان نے چینی طیاروں کی در اندازی پر فکر کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ اسے حملے کا خطرہ محسوس ہو رہا ہے۔وائٹ ہاؤس میں صحافیوں سے بات چیت کے دوران انہوں نے کہاکہ میں نے تائیوان سے متعلق صدر شی جن پنگ سے بات کی ہے۔ان کا مزید کہنا تھا ہم نے اتفاق کیا کہ ہم تائیوان معاہدے کی پاسداری کریں گے، ہم اسی موقف پر ہیں اور ہم نے یہ بھی واضح کر دیا کہ مجھے نہیں لگتا کہ انہیں اس کی پاسداری کرنے کے علاوہ کچھ اور کرنے کی ضرورت ہے۔جو بائیڈن کا بظاہر اشارہ امریکا کے اس موقف کی طرف تھا جس کے تحت امریکا ون چائنا یعنی متحدہ چین کی پالیسی پر قائم ہے۔چین کا دعوی ہے کہ تائیوان اس کے اپنے ملک کا ایک حصہ ہے اور اگر ضرورت پڑی تو طاقت کے زور پر مکمل طور پر اسے ضم کیا جا سکتا ہے۔تائیوان کا کہنا ہے کہ وہ ایک آزاد ملک ہے اور اگر ضرورت پڑی تو وہ اپنی آزادی اور جمہوریت کا دفاع کرے گا۔وائٹ ہاؤس میں قومی سلامتی مشیر جیک سلوین چھ اکتوبر بدھ کے روز سوئٹزر لینڈ میں خارجی امور کے چینی مشیر ینگ جائی چی سے ملاقات کرنے والے ہیں۔

دنیا بھر سے سے مزید