• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

گورنر سندھ کو شاید گندم کی پیداوار، اس کی کھپت کے حوالے سے کچھ معلومات نہیں، سعید غنی


وزیر اطلاعات و محنت سندھ سعید غنی کا کہنا ہے کہ گورنر سندھ کو شاید گندم کی پیداوار، اس کی کھپت اور اس کے پروکیورمنٹ کے حوالے سے کچھ معلومات نہیں ہیں، اگر گورنر صاحب کو ان سب کا علم ہوتا تو وہ اپنی حکومت کی نالائقی کو چھپانے کے لئے بھی اس طرح کی بات نہ کرتے۔

گورنر سندھ کے گندم کی قیمتوں سے متعلق بیان پر رد عمل دیتے ہوئے اپنے ویڈیو بیان میں سعید غنی نے کہا کہ ملکی کھپت 2 کروڑ 80 لاکھ میٹرک ٹن جبکہ پیداوار 2 کروڑ 70 لاکھ ٹن ہے اور اس میں سے 2 کروڑ میٹرک ٹن گندم پنجاب میں پیدا ہوتی ہے۔

سعید غنی نے کہا کہ پنجاب میں ضرورت سے زیادہ گندم کی  پیداوار کے باوجود وہاں آٹے کی قلت اور قیمتوں میں اضافہ گورنر صاحب کو نظر نہیں آرہا۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ پنجاب میں جو آٹا استعمال ہوتا ہے وہ کراچی میں استعمال نہیں ہوتا اور جو فائن آٹا یہاں استعمال ہورہا ہے اس کی قیمت پنجاب میں بھی 70 روپے سے زائد ہے۔

سعید غنی نے کہا کہ سندھ کے دیگر اضلاع میں جو آٹا پنجاب میں استعمال ہورہا ہے اس کی قیمت بھی 55 سے 56 روپے کلو ہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت 15 اکتوبر سے پروکیورمنٹ کی گئی 12 لاکھ ٹن گندم ریلیز کرنا شروع کررہی ہے، گندم ریلیز ہونے کے بعد قیمتوں میں کمی آنا شروع ہوجائے گی۔

سعید غنی نے کہا کہ پروکیورمنٹ کا مقصد آخری 5 ماہ میں آٹے کی بڑھتی قیمتوں کو کنٹرول کرنا ہوتا ہے، سندھ حکومت نے گذشتہ سال اور اس سال بھی دانشمندانہ فیصلے کیے ہیں۔

قومی خبریں سے مزید