انتخابات قریب آتے ہی سیاسی درجہ حرارت میں اضافہ

July 08, 2021

بلاول بھٹو زرداری ، سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف، سابق وزیر اطلاعات چوہدری قمر الزمان اور PTIسے وزیر امور کشمیر علی امین گنڈاپور ، وفاقی وزیر مواصلات مراد سعید اور سیکرٹری جنرل PTIعامر کیانی کے آزاد کشمیر کے انتخابی جلسوں سے خطاب اور 8جولائی سے محترمہ مریم نواز کی آزاد کشمیر میں متوقع آمد سے جہاں سیاسی درجہ حرارت میں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے وہاں 2سال بعد 25جولائی تک کیلئے مسئلہ کشمیر کو پھر سے زندہ کر دیا گیاہے۔

25جولائی کے بعد کیا ہونے جا رہا ہے یہ کہانی پھر سہی۔ بادی النظر میں آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی کی 45نشستوں میں سے رواں ہفتے تک پی ٹی آئی 18نشستوں کیساتھ پہلے ، پی پی پی 10نشستوں کیساتھ دوسرے ، پی ایم ایل این 7نشستوں کیساتھ تیسرے اور مسلم کانفرنس 4نشستوں کیساتھ چوتھے نمبر پر ہے جبکہ 6نشستوں پر PTI,PPP, PMLNاورMCمیں سخت مقابلہ متوقع ہے۔ کہتے ہیں کہ سیاست میں کوئی حرف آخر نہیں ہوتا ۔الیکشن کی آخری رات تک پارٹی پوزیشنز اوپر نیچے ہوتی رہتی ہیں ۔ پولنگ میں ابھی 17روز باقی ہیں ۔ موجودہ پارٹی پوزیشنز میں تبدیلی بھی آسکتی ہے۔

اگر حلقہ وائز پارٹی پوزیشنز کا سرسری جائیزہ لیں تو LA-1ڈڈیال سے PTIکے امیدوار اظہر صادق ، PMLNکے چوہدری مسعود خالد اور PPPکے چوہدری افسر شاہد کے درمیان مقابلہ ہے جہاں PTIکے چوہدری اظہر صادق کو برتر ی حاصل ہے۔ LA-2چکسواری میں PTIکے چوہدری ظفر انور اور PPPکے چوہدری قاسم مجید میں سنسنی خیز مقابلہ متوقع ہے ۔ LA-3میرپور سے صدر پی ٹی آئی سابق وزیراعظم بیرسٹر سلطان محمود چوہدری اور PMLNکے چوہدری محمد سعید کے درمیان سخت ترین مقابلہ ہے۔ کون کامیاب ہوگا یہ کہنا قبل از وقت ہوگا تاہم PPPکے امیدوار چوہدری محمد اشرف اور TLPکے امیدوار چوہدری عمیر اصغر بھی بھرپور مقابلے کی پوزیشن میں ہیں ۔

LA-4کھڑی شریف میں PTIسے چوہدری ارشد حسین اور PMLNکے چوہدری رخسار احمد کے مابین بھی سخت اور اعصاب شکن مقابلے کی توقع کی جا رہی ہے۔ LA-5برنالہ میں PPPکے چوہدری پرویز اشرف ، MCکے مرزاشفیق جرال اور PTIکے چوہدری انوار الحق نور میں مقابلہ ہے۔ یہاں PPPکے امیدوار چوہدری پرویز اشرف کچھ بہتر پوزیشن میں ہیں ۔ LA-6سماہنی میں PTIکے چوہدری علی شان سونی اور آزاد امیدوار چوہدری عبدالرزاق کے مابین مقابلہ ہے۔ LA-7بھمبر شہر میںPTIکے امیدار چوہدری انوار الحق اور PMLNکے چوہدری طارق فاروق کے درمیان کانٹے دار مقابلہ کی توقع ہے۔

LA-8راجہ محل کوٹلی میں MCکے ملک نواز اور PTIکے ظفر ملک کے مابین مقابلہ ہے جہاں ملک نواز کو سبقت حاصل ہے۔ LA-9نکیال میں MCکے سردار محمد نعیم کو PTIکے آصف کیلوی اور PPPکے چوہدری جاوید بڈھانوی پر سبقت حاصل ہے۔ LA-10میں PPPکے اپوزیشن لیڈر چوہدری محمد یاسین اور MCکے سردار فاروق سکندر میں مقابلہ ہے۔ LA-11سہنسہ میں PTIکے چوہدری اخلاق اور PMLNکے راجہ نصیر کے مابین سخت مقابلہ ہے ۔LA-12چڑھوئی میں PPPکے اپوزیشن لیڈر چوہدری محمد یاسین کو PMLNکے راجہ ریاست ، PTIکے شوکت فرید اور MCکے راجہ نعیم منصف داد پر واضح برتری حاصل ہے۔ LA-13کھوئیرٹہ میں PTIکے چوہدری نثار عنصر ابدالی اور PPPکے بیرسٹر ولید انقلابی میں سخت مقابلہ ہے۔ LA-14غربی باغ میں MCکے سابق وزیراعظم سردار عتیق احمد خان کو PTIکے میجر (ر) محمد لطیف خلیق اور PMLNکے راجہ فیصل آزاد خان سے سخت مقابلہ ہے۔ تاہم سردار عتیق احمد خان کو سبقت حاصل ہے ۔

LA-15وسطی باغ میں PTIکے سردار تنویر الیاس ، PMLNکے مشتاق منہاس ، MCکے راجہ محمد یاسین ، PPPکے سردار ضیا قمر ، جماعت اسلامی کے عبدالرشید ترابی مد مقابل ہیں ۔ اصل مقابلہ سردار تنویر الیاس اور راجہ محمد یاسین کے مابین ہے تاہم اس حلقے میں2016؁ء کے حیران کن نتائج دیکھتے ہوئے سردار تنویر الیاس اس معرکے میں وکٹری سٹینڈ پر نظر آتے ہیں ۔ LA-16میں اصل مقابلہ PPPکے سردار قمر الزمان اور PTI کے سردار میر اکبر کے مابین ہے۔ LA-17سے PPPکے فیصل ممتاز راٹھور کو PMLNکے امیدوار چوہدری محمد عزیز اور PTIکے عامر نذیر چوہدری پر سبقت حاصل ہے۔ LA-32 چکار/ہٹیاں میں PMLNکے وزیراعظم راجہ فاروق حیدر خان اور PPPکے صاحبزادہ اشفاق ظفر کے مابین مقابلہ ہے۔ جبکہ LA-33لیپہ میں PTIکے امیدوار دیوان علی خان چغتائی کو PMLNکے وزیراعظم راجہ فاروق حیدر خان اور PPPکے امیدوار شوکت جاوید میر پر سبقت حاصل ہے۔