• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پاکستانی ہتھنی ’مدھوبالا‘ کو برسوں بعد سکون مل گیا


پاکستانی ہتھنی ’مدھوبالا‘ کو برسوں بعد دانتوں کے درد سے آرام مل گیا ہے۔

لیجنڈری ہندوستانی اداکارہ کے نام سے منسوب 16 سالہ پاکستانی ہتھنی، مدھوبالا گزشتہ کئی برسوں سے دانتوں کے انفیکشن اور ٹوٹے ہوئے دانت کے سبب درد میں مبتلا تھی، بالآخر مدھوبالا کو رواں ہفتے بدھ کے روز علاج کے بعد آرام مل گیا ہے۔

مدھوبالا کراچی میں فور پاز ’Four Paws‘ (جانوروں کی فلاح و بہبود کے عالمی گروپ) کی ایک آٹھ رکنی ٹیم کے زیر علاج تھی۔

علاج کے دوران مدھوبالا کی آنکھیں بند اور ٹانگیں باندھ دی گئی تھیں تاکہ اسے دوا دینے میں آسانی ہو سکے۔

مدھوبالا کے دانت کے علاج کے لیے جانوروں کے ڈاکٹروں کو متاثرہ دانت کو نکالنے کے لیے بھاری جراحی اوزار استعمال کرنے پڑے، اس دوران ٹوٹے ہوئے دانت کے ٹکڑے نکالے گئے۔

مدھوبالا کا علاج کرنے والی ایک ڈاکٹر مرینا نے میڈیا سے گفتگو کے دوران بتایا کہ طویل مدت تک رہنے والی سوزش کی وجہ سے مدھوبالا کا جبڑا اتنا نازک اور پتلا تھا کہ ٹوٹے ہوئے دانت کو نکالنے میں کافی مشکل پیش آئی تھی۔

ڈاکٹر مرینا کے مطابق مدھوبالا کے اس آپریشن سے قبل ایک اینڈواسکوپی کی گئی تھی جس میں 31 سینٹی میٹر (12.2 انچ) کا ایک دانت متاثر دیکھا گیا تھا۔

یاد رہے کہ فور پاز ’Four Paws‘ ہی نے 2020ء میں دنیا کا سب سے تنہا ہاتھی کا لقب رکھنے والے کاون ہاتھی کو اسلام آباد سے کمبوڈیا منتقل کیا تھا۔

خاص رپورٹ سے مزید