آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
اتوار15؍محرم الحرام 1441ھ 15؍ستمبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

عرب کے معروف شاعر فرزدق کہتے ہیں کہ میں 60 ہجری میں اپنی والدہ کے ہمراہ حج کے لیے مکہ مکرمہ آیا۔ جب میں حرم کی حدود میں داخل ہوا ور مقام صفا تک پہنچا تو دیکھا کہ وہاں بہت سے اونٹ ہنکائے جارہے تھے۔ میں نے لوگوں سے پوچھا کہ یہ اونٹ کس کے ہیں؟ تو لوگوں نے بتایا کہ یہ اونٹ امام حسینؓ کے ہیں۔ فرزدق کہتے ہیں کہ اسی اثناء میں میری نگاہ امام حسین ؓ پر پڑی۔ میں نے اُن کی خدمت میں حاضر ہوکر انہیں سلام پیش کیا اورعرض کیا کہ اے نواسۂ رسول ﷺ !اﷲ آپ کی مرادیں پوری فرمائے اورمیرے ماں باپ آپ پر قربان ہوں ، آپ حج کی ادائیگی کے بغیر مکے سے کیونکر روانہ ہورہے ہیں؟ امام حسینؓ نے میرے سوال کا جواب دینے کے بجائے مجھ سے پوچھا تم کون ہو؟میں نے بتایا کہ میں آل رسول ﷺ کا غلام ہوں ۔میری بات سن کر امام نے پوچھا کہ تم عراقیوں کی بابت کیاجانتے ہو؟ میں نے عرض کیا کہ میں عراقیوں کو خوب جانتا ہوں۔ اُن کے دل آپ کے ساتھ ہیں اور اُن کی تلواریں ابن زیاد کے ساتھ ہیں۔میری یہ بات سن کر امام عالی مقامؓ نے فرمایا:تم سچ کہتے ہو، اب معاملہ اللہ ہی کے ہاتھ میں ہے ۔وہ جو چاہتا ہے ،وہی ہوتا ہے ۔ یہ کہہ کر آپ نے اپنی سواری آگے بڑھادی۔ (تاریخ طبری)

اقراء سے مزید