آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر16؍محرم الحرام 1441ھ 16؍ستمبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

برطانیہ میں عصمت دری کے ملزمان کی سزائوں میں کمی

لندن( پی اے ) برطانیہ میں عصمت دری کے ملزمان کو سزائوں کے فیصلے گزشتہ ایک عشرے کے مقابلے میں کم ترین سطح پر ریکارڈ کئے گئے ہیں، نئی رپورٹ کے مطابق 19-2018 کے دوران ایک ہزار 925 افراد کوسزائیں سنائی گئیں جو کہ اس سے قبل کے سال کے مقابلے میں 27 فیصد کی کمی ہوئی ہے،جبکہ یہ کہاجارہا ہے کہ عصمت دری کے واقعات اپنی بلند ترین سطح پر پہنچ چکے ہیں اور ان کی تعداد 58 ہزار تک پہنچ چکی ہے۔کمپینرز کاکہنا ہے کہ سی پی ایس نے عصمت دری کے مقدمات کے بارے میں اپنا رویہ تبدیل کرلیا ہے۔سی پی ایس نے اس الزام کی تردید کی ہے جبکہ سی پی ایس نے اپنی فیصلہ سازی پرنظر ثانی کرنے کااعلان کیا ہے۔انگلینڈ اورویلز کے اعدادوشمار سے ظاہرہوتاہے کہ عصمت دری کی شکایات کے صرف 3 فیصد ملزمان کو سزائیں دی گئیں،خواتین اورلڑکیوں پر تشدد سے متعلق سالانہ رپورٹ سے بھی ظاہرہوتاہے کہ 19-2018 میں عصمت دری اوردیگر جرائم کی شرح میں کمی ہوئی ہے،اعدادوشمار کے مطابق 18-2017 کے دوران عصمت دری اور خواتین کے خلاف دیگر جرائم کی تعداد 2 ہزار 822 تھی جبکہ 19-2018 کے دوران اس طرح کے ایک ہزار758 واقعات ریکارڈ کئے گئے، 18-2017 جب موجودہ طریقہ کار کے تحت ریکارڈ مرتب کرنا شروعکیاگیاتھا 2 ہزار 201 مقدمات میں سزائیں سنائی گئی تھیںاگرچہ ان میں سے بعض مقدمات کی تفتیش سابقہ برسوں کے دوران شروع

کردی گئی تھی۔ سی پی ایس کاجس کے بجٹ میں2010 میں 25فیصد کٹوتی کردی گئی تھی کہنا ہے کہ وہ جنسی زیادتیوں کے مقدمات سے نمٹنے کے طریقہ کار میں بہتری کیلئے سخت محنت کی جارہی ہے۔عصمت دری کے مجرموں کو سزائوں کی شرح میں کمی کے بارے میں سی پی ایس کاکہناہے کہ اس کاسبب پولیس کی جانب سے عصمت دری کے کم مقدمات عدالتوں کوبھیجنا اور ڈیجیٹل شواہد اورمیٹریل ملزمان کےوکلائے دفاع کو فراہم کئے جانے کے مطالبات کی وجہ سے مقدمات کے فیصلوں میں تاخیر ہوتی ہے۔خواتین کے خلاف تشدد کے خاتمے سے متعلق کمپینرز نے اس سے قبل دعویٰ کیا ہے کہ سی پی ایس کے وکلا نے خاموشی کے ساتھ اپنا طریقہ کار تبدیل کردیاہے اور وہ مقدمات کاجائزہ لینے کے بعد اگر سمجھتے ہیں کہ جیوری موجود شواہد پر ملزم کو سزا نہیں دے گی تو وہ مقدمات کو ختم کردیتے ہیں،سینٹر فار ویمنز جسٹس کی نمائندگی کرنے والی خواتین کی تنظیموں کا اتحاد معقول جواز کے بغیر عصمت دری کے مقدمات ختم کرنے کے خلاف سی پی ایس کے خلاف مقدمہ دائر کرنے پر غور کررہاہے۔

یورپ سے سے مزید