آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر 20؍ربیع الاوّل 1441ھ 18؍نومبر 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

چہلم کے جلوس سخت سیکیورٹی میں اپنے راستوں پر گامزن

نواسۂ رسول حضرت امام حسین رضی اللّٰہ عنہ اور اُن کے رفقاء کے چہلم کے موقع پر کراچی سمیت ملک بھر میں سخت سیکیورٹی انتظامات میں شبیہ علم و ذوالجناح کے جلوس برآمد ہوئے۔

ملک بھر میں شہدائے کربلا کے چہلم کے جلوسوں کے لیے سخت حفاظتی انتظامات کیے گئے ہیں، کوئٹہ، بنوں، کوہاٹ، ٹانک اور پارہ چنار میں موبائل فون سروس بند کر دی گئی ہے۔

ملک بھر کی طرح کراچی میں بھی آج شہدائے کربلا اور حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ کا چہلم انتہائی عقیدت و احترام کے ساتھ منایا جا رہا ہے۔

چہلم کے موقع پر کراچی سے برآمد ہونے والے مرکزی جلوس کی گزرگاہ کی طرف آنے والی سڑکیں رات گئے ہی کنٹینر رکھ کر بند کر دی گئیں، علاقہ پولیس کی جانب سے رات بھر گلیوں اور راستوں کو بند کرنے کا سلسلہ جاری رہا، جبکہ جلوس کی گزرگاہ کو جلوس کے برآمد ہونے سے قبل مکمل طور پر سیل کر دیا گیا۔

چہلم حضرت امام حسینؓ: علماء کرام کی ڈی جی رینجرز سے ملاقات

ڈی جی رینجرز (سندھ) میجر جنرل عمر احمد بخاری سے تمام...

سندھ بھر میں دفعہ 144 نافذ ہے، جبکہ صوبے میں موٹر سائیکل کی ڈبل سواری پر بھی پابندی عائد ہے، کراچی میں جلوس کی گزرگاہوں پر موبائل سروس جزوی طور پر بند ہے۔

شہدائے کربلا کے چہلم کا مرکزی جلوس اپنے مقررہ راستے پر گامزن ہے جس میں شہر بھر سے مختلف چھوٹے بڑے جلوس شامل ہو رہے ہیں۔

ملک کے دیگر حصوں کی طرح شہدائے کربلا کی یاد میں آج کوئٹہ میں بھی چہلم کا علم تعزیوں اور ذوا لجناح کا جلوس نکالا جا رہا ہے، سیکیورٹی کے لیے پولیس کے 6 ہزار سے زائد اہلکار تعینات کیے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیئے: چہلم امام حسین پر صوبہ سندھ میں ڈبل سواری پر پابندی

اس حوالے سے ماتمی جلوس نکالا گیا ہے، اس موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں، جبکہ شہر میں موبائل فون سروس معطل ہے۔

شہدائے کربلا کے چہلم کا مرکزی جلوس علم دار روڈ پر رحمت اللّٰہ چوک سے صبح ساڑھے 9 بجے برآمد ہوا، جلوس سعید احمد روڈ، طوغی روڈ، سرائے نمک مری آباد سے ہوتا ہوا عصر کے وقت بہشت زینب ہزارہ قبرستان پر اختتام پزیر ہو گا۔

ہزارہ ٹاؤن کا علم تعزیوں اور ذوالجناح کا جلوس ولی عصر امام بارگاہ سے برآمد ہوا جو ہزارہ ٹاؤن کے مقررہ راستوں سے ہوتا ہوا ہزارہ قبرستان پہنچ کر اختتام پذیر ہو گا۔

جلوس کےموقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں، جلوس کے روٹ کو رکاوٹیں کھڑی کر کے اور خاردار تاریں لگا کر بند کر دیا گیا ہے۔

ڈی آئی جی پولیس کوئٹہ عبدالرزاق چیمہ کے مطابق چہلم کے جلوس کے موقع پر شہر بھر میں پولیس کے 6 ہزار اہلکار تعینات ہیں اور پولیس کے علاوہ فرنٹیئر کور اور لیویز اہلکار بھی فرائض سر انجام دے رہے ہیں، جبکہ جلوس کے روٹ کی سی سی ٹی وی کیمروں کے ذریعے نگرانی بھی جاری ہے۔

قومی خبریں سے مزید