آپ آف لائن ہیں
بدھ4؍ شوال المکرم 1441ھ 27؍مئی 2020ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

عامر خان نے خالد مقبول کے ساتھ ہاتھ کردیا ہے، مصطفیٰ کمال

مصطفیٰ کمال  کی احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو


چیئرمین پاک سرزمین پارٹی مصطفیٰ کمال کا کہنا ہے کہ استعفے کا نام لے کرکراچی والوں کے ساتھ ڈرامہ کیا جا رہا ہے، عامر خان نے خالد مقبول صدیقی کے ساتھ ہاتھ کردیا ہے، میں ایم کیو ایم کے کارکنوں سے کہتا ہوں کہ وہ خالد مقبول کا ساتھ دیں۔

کراچی کی احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے پی ایس پی سربراہ نے کہاکہ متحدہ قومی موومنٹ ایم کیوایم حقیقی بن گئی ہے،یہ لوگ خالد مقبول صدیقی کو ہٹا کر امین الحق کو لانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

مصطفیٰ کمال نے کہا کہ خالد مقبول صدیقی کے ساتھ غلط کیا جا رہا ہے، امین الحق کو وزیر بنانا سازش ہے، آخر امین الحق کیا مذاکرات کر رہے ہیں؟

انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم والے حکومت سے باہر نہیں جاسکتے، جیسے ہی یہ حکومت سے جائیں گے سب پکڑے جائیں گے، کراچی والوں کےنام پر ڈرامہ بند ہونا چاہیے، شہر قائد کے 70 لاکھ لوگوں کومردم شماری میں شامل کیا جائے۔

سربراہ پی ایس پی نے کہا کہ ان لوگوں کا فروغ نسیم پر زور نہیں چلتا،یہ ان سے استعفیٰ نہیں لے سکتے،یہ ان لوگوں کی آخری باری ہے، یہ مال بنانا چاہتے ہیں۔

مصطفیٰ کمال نے دعوی کیا کہ ایم کیوایم والوں کی فائلیں تیار ہیں جیسے حکومت سے باہر آئیں گے سب پکڑے جائیں گے،انہوں نے کہا کہ میں ایم کیو ایم کے کارکنوں سے کہتا ہوں کہ خالد مقبول کا ساتھ دیں۔

پی ایس پی سربراہ نے کہا کہ اگر حکومت سے استعفیٰ دینا تھا تو دونوں وزراء استعفیٰ دیتے، میئر کراچی اور میئر حیدرآباد سے استعفیٰ کیوں نہیں دلوایا گیا؟

مصطفیٰ کمال نے کہا کہ ایم کیو ایم کے آخری آدمی خالد مقبول تھے ان کا کام بھی اتار دیا گیا، ایم کیوایم والے حکومت سے باہر نہیں جاسکتے، ان کی سانسیں کرپشن سے جڑی ہوئی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ ان لوگوں کی آپس کی لڑائی ہے، عامر خان نے خالد مقبول صدیقی کے ساتھ ہاتھ کردیا ہے، ایک وزیر کا استعفیٰ لے لیا دوسرے کو چھوڑ دیا۔

مصطفیٰ کمال نے کہا کہ یہ شہر اب کسی ایک زبان بولنے والے کا نہیں ہے، ساری ایم کیوایم کا کام عامر خان نے اتارا ہے۔

قومی خبریں سے مزید