آپ آف لائن ہیں
بدھ11؍ شوال المکرم 1441ھ3؍جون 2020ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

علماء کا شکرگذار ہوں کہ انہوں نے رہنمائی کی، مراد علی شاہ

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ کورونا وائرس انتہائی خطرناک وبا ہے اور اس نے دیکھتے ہی دیکھتے پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے، سب نے لاک ڈاؤن کیا اور لوگوں کے میل جول کو روکا، تاکہ لوگوں کو اس وبا سے محفوظ رکھا جاسکے۔

 وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے ان خیالات کا اظہار  علماء کرام سے ملاقات کے دوران کیا۔ انہوں  نے کہا ہے کہ اس کا پھیلاؤ بہت خطرناک ہے، اس کو روکا جائے۔ ملاقات میں صوبائی وزیر سید ناصر حسین شاہ، مشیر قانون مرتضیٰ وہاب، چیف سیکریٹری سید ممتاز علی شاہ، آئی جی سندھ مشتاق مہر، پروفیسر ڈاکٹر باری، سیکریٹری داخلہ، وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو اور دیگر شریک تھے۔ 

ملاقات کرنے والے علماء کرام میں مفتی تقی عثمانی، مفتی عمران عثمانی، مفتی زبیر عثمانی، ڈاکٹر عدیل، مولانا امداد اللّٰہ، ڈاکٹر سعید سکندر، مفتی منیب الرحمان، مفتی رحمان امجد، مفتی عابد مبارک، مفتی رفیع الرحمان، علامہ شہنشاہ حسین رضوی، مفتی یوسف کشمیری، مولانا عبدالوحید اور مفتی عبدالرحمان شامل تھے۔

وزیراعلیٰ سندھ نے علماء کرام کو اپنے فیصلوں سے متعلق ایک بار پھر اعتماد میں لیا۔ مراد علی شاہ نے کہا کہ سندھ میں 508 کورونا وائرس سے متاثرہ لوگ ہیں، لوکل ٹرانسمیشن سے 171 افراد متاثر ہوئے ہیں، باقی باہر سے آئے ہیں لیکن انکا ہمیں پتہ ہے۔ 27 فروری کو جب پہلا کیس آیا تھا تو ہم نے اقدامات کرنا شروع کیے تھے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ ہم نے سب سے پہلے اسکول پھر ریسٹورنٹ اور چند دن بعد تفریحی مقامات بند کیے، آخرکار ہم ایک مکمل لاک ڈاؤن پر آگئے، سب سے جو مشکل بات تھی وہ تھی مساجد میں اجتماعات کو روکنا۔

 مراد علی شاہ نے کہا کہ میں علماء کا شکرگذار ہوں کہ علماء نے ہماری رہنمائی کی، حکومت نے طبی ماہرین کی مدد سے فیصلے کیے، مساجد ہم نے کھلی رکھی ہیں اذانیں ہورہی ہیں، مساجد میں متعین لوگ اپنی جماعت کررہے ہیں، ہمارا مقصد صوبے کے عوام اور پورے ملک کےعوام کو اس مرض سے بچانا ہے۔

قومی خبریں سے مزید