اماں مجھے لینے آئی ہیں، عرفان خان کے آخری کلمات
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

اماں مجھے لینے آئی ہیں، عرفان خان کے آخری کلمات

گزشتہ روز انتقال کرنے والے بالی ووڈ کے لیجنڈری اداکار عرفان خان نے موت سے چند منٹ قبل اہلیہ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’اماں مجھے لینے آئی ہیں۔‘

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق عرفان خان کی موت سے تین روز قبل انتقال کرجانے والی اپنی والدہ کو اپنی زندگی کے آخری لمحات میں دیکھ رہے تھے۔

ممبئی کے  کوکیلابین اسپتال کے انتہائی نگہداشت یونٹ میں انتقال کرنے والے عرفان خان کے پاس آخری وقت میں اُن کی اہلیہ، بیٹا بابیل سابق مینجر آصف اور ڈرائیور حشمت موجود تھے۔ 

دنیا سے رخصت ہونے سے قبل عرفان خان نے اپنی اہلیہ سے کہا کہ ’دیکھو مجھے اماں لینے آئی ہیں ، وہ میری تکلیف کم کرنے آئی ہیں۔‘

آخری کلمات ادا کرتے ہوئے اداکار نے اپنی اہلیہ سے یہ بھی کہا کہ  ’ میں ہار چکا ہوں، اب مجھے یقین ہے کہ میں مرجاؤں گا، اماں کمرے میں موجود ہیں، دیکھو وہ میرے ساتھ بیٹھی ہیں، مجھے لینے آئی ہیں۔‘

عرفان خان کی اہلیہ یہ باتیں سُننے کے بعد اپنے جذبات قابو میں نہ رکھ سکیں اور زاروقطار رونے لگیں۔اہلیہ سے گفتگو کے دوران عرفان خان کی طبیعت بگڑی جس کے ایک گھنٹے بعد ڈاکٹرز نے اُن کی موت کی تصدیق کردی۔

واضح رہے کہ  ورسٹائل اداکار عرفان خان گزشتہ روز  53 سال کی عمر میں کولون انفیکشن کے باعث انتقال کرگئے تھے۔

یاد رہے کہ عرفان خان کے انتقال سے 3 روز قبل اُن کی والدہ سعیدہ بیگم 95 برس کی عمر میں بھارتی ریاست راجستھان کے شہر جے پور میں انتقال کرگئیں تھیں۔

کورونا وائرس کے ممکنہ پھیلاؤ کے پیش نظر بھارت میں جاری ملک گیر لاک ڈاؤن کے باعث ادکار والدہ کے جنازے میں ویڈیو کانفرنس کال کے ذریعے شامل ہوئے تھے۔

انٹرٹینمنٹ سے مزید