آپ آف لائن ہیں
منگل22؍ذیقعد 1441ھ 14؍جولائی 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

آپ کے مسائل اور اُن کا حل

سوال:۔ نفل، سنت اور فرض نمازوں کو ادا کرنے کا علیحدہ طریقہ ہے یا پھر ان سب کا طریقہ ایک ہی ہے یا صرف نیت باندھنے سے ہی یہ نمازیں الگ تصور ہو جاتی ہیں؟(فرح خالد)

جواب: ۔ سنتِ مؤکدہ ادا کرنے کا وہی طریقہ ہے جو فرض نماز ادا کرنے کا ہے،البتہ چار رکعت والی سنتِ مؤکدہ میں چاروں رکعتوں میں سورۃالفاتحہ کے بعد کوئی اور سورت بھی ملائی جائے گی،جب کہ فرض نماز میں آخری دو رکعت میں صرف سورۃ الفاتحہ پر اکتفاء کیا جائے گا۔ سنن غیر مؤکدہ اور نوا فل میں چوں کہ ہر دو رکعت کی حیثیت مستقل نماز کی ہے، اس لیے ان میں زیادہ بہتر یہ ہے کہ دوسری رکعت کے قعدہ میں ”التحیات“ کے بعد درود شریف بھی پڑھیں اور تیسری رکعت میں کھڑے ہونے پر ثناء بھی پڑھیں۔(الدر المختار2 / 28۔6 / 732 مراقی الفلاح شرح نور الايضاح (1 / 100)

اقراء سے مزید