آپ آف لائن ہیں
جمعہ16؍ذی الحج 1441ھ7؍اگست2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

ایسا نہیں ہو گا کہ کلبھوشن راتوں رات فرار ہو جائے: وزیرِ خارجہ


وزیرِ خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کہتے ہیں کہ ایسا نہیں ہو گا کہ کلبھوشن یادیو راتوں رات فرار ہو جائے۔

ایوان ِبالا (سینیٹ ) کے اجلاس میں بلوں کی منظوری کے بعد اظہارِ خیال کرتے ہوئے وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ انسدادِ دہشت گردی (ترمیمی) بل 2020ء اور اقوام متحدہ (سیکیورٹی کونسل) (ترمیمی) بل 2020ء کی منظوری پر ایوانِ بالا کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ دشمن پاکستان کو بلیک لسٹ میں دھکیلنے کی سازش کر رہا ہے، بھارتی عزائم خاک میں ملا دیئے، بھارت کو ایک بار پھر منہ کی کھانا پڑے گی، پاکستان کو اب گرے لسٹ میں رکھنے کا کوئی جواز نہیں۔

وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بلوں کی منظوری پر اس ایوان کا شکریہ ادا کرتا ہوں، ثابت ہوا ہے کہ یہ ایوان سنجیدہ ہے اور اس کے ارکان میں فہم و فراست ہے اور وہ جماعتی حدود و قیود کو پھلانگ کر ملکی مفادات کو اولیت دیتے ہیں، جے یو آئی ف کے سوا تمام اپوزیشن جماعتوں نے بھی بل کی حمایت کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ دشمن پاکستان کو بلیک لسٹ میں دھکیلنے اور مالی مشکلات سے دو چار کرنے کی سازش کر رہا ہے، میں مسلم لیگ نون، پیپلز پارٹی اور جماعتِ اسلامی سمیت تمام جماعتوں کا شکریہ ادا کرتا ہوں، انہوں نے بھارت کے عزائم خاک میں ملا دیئے ہیں۔

وزیرِ خارجہ نے کہا کہ ہمارے باہمی سیاسی اختلافات ہو سکتے ہیں لیکن ہم قومی معاملات پر ایک مؤقف رکھتے ہیں، جس خوش اسلوبی سے مسلم لیگ نون، پیپلز پارٹی کے ارکان نے کمیٹی میں بل کی حمایت کی مجھے یقین ہے کہ اس سے فائدہ پاکستان کا ہو گا، حکومتیں آنی جانی ہیں لیکن ریاستی مفادات سب سے بالا تر ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کاش جے یو آئی ف بھی اپنے فیصلے پر نظرِثانی کرتی، جے یو آئی ف نے مخالفت کر کے اچھا تاثر نہیں دیا، ملک کے لیے دل بڑا کریں۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کلبھوشن یادیو کے آرڈیننس کے مضمرات کے حوالے سے تشویش کا اظہار کیا گیا ہے، وہ قید میں ہے ملک چھوڑ کر نہیں گیا، نہ وہ راتوں رات فرار ہو سکے گا، اسے کوئی رعایت نہیں دی گئی، بھارت یہ کیس عالمی عدالتِ انصاف میں لے گیا، ان کا خیال تھا کہ اسے رہا کرا کے بھارت منتقل کرا لے گا، مگر بھارت کو شکست ہوئی۔

یہ بھی پڑھیئے: کلبھوشن کو پاکستان میں ہی رکھا جائیگا، وزیر خارجہ

انہوں نے کہا کہ کلبھوشن کو جنیوا کنونشن کے تحت قونصلر رسائی دینا ہے، اپیل کا حق دینا ہے، بھارت کی کوشش تھی کہ اسے دوبارہ عالمی عدالتِ انصاف جانے کا بہانہ مل جائے، اس لیے ہم نے کلبھوشن کو دوبارہ قونصلر رسائی دی، بھارت کے اعتراضات دور کیے، ہم نے بھارتی عزائم خاک میں ملا دیئے ہیں۔

وزیرِ خارجہ نے ایوان کو بتایا کہ ڈھائی گھنٹے تک بھارتی سفارت کاروں نے کلبھوشن سے ملاقات کی، بھارتی سفارت کاروں کی کوشش تھی کہ کس طرح وہ اس ملاقات سے بھاگیں تاکہ بہانہ بنا سکیں، جب کوئی بہانہ نہ ملا تو اعتراض کیا گیا کہ سیکیورٹی والے 2 افراد دور جائیں، ہم نے کہا اس کے لیے بھی تیار ہیں لیکن پھر ان کے پاس کوئی جواب نہ تھا۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ بھارت کے عزائم کو ہم نے اس قانون سازی سے خاک میں ملا دیا ہے، بھارت کو ایک بار پھر منہ کی کھانا پڑے گی، ایشیاء پیسفک گروپ میں اسے رپورٹ کریں گے، پاکستان کو گرے لسٹ میں رکھنے کا اب کوئی جواز نہیں، اگر پاکستان گرے لسٹ سے نکل آتا ہے تو یہ اس ایوان کی کامیابی ہے۔

قومی خبریں سے مزید