آپ آف لائن ہیں
منگل9؍ربیع الاوّل 1442ھ 27؍اکتوبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

بیڈ بوائے بلین ائیرز کی ریلیز روکنے کا فیصلہ آزادی اظہار پر قدغن ہے، نیٹ فلکس

نئی دہلی (مانیٹرڈیسک)اسٹریمنگ سروس نیٹ فلکس نے ایک بھارتی عدالت کی جانب سے اپنی نئی دستاویزی سیریز بیڈ بوائے بلین ائیرز کی ریلیز روکنے کے فیصلے کو آزادی اظہار پر قدغن قرار دیا ہے۔ یہ نیٹ فلکس سیریز بھارت کے چار ارب پتی شراب کے تاجر وجے مالیا، سہارا گروپ کے مالک سبرتا روے، بھارتی آئی ٹی ایگزیکٹیو راما لنگا راجو اور جیولر نیراو مودی پر بنائی گئی ہے، جنہیں دھوکہ دہی کے الزامات کا سامنا ہے۔نیٹ فلکس نے سیریز کی اس ماہ ہونے والی ریلیز کو بہار کی ہائی کورٹ کے حکم پر روک دیا ہے۔ عدالت میں سہارا گروپ نے موقف اپنایا تھا کہ یہ سیریز سبرتا روئے کی نجی زندگی کے حوالے سے حقوق کی خلاف ورزی کرتی ہے۔نیٹ فلکس کے مطابق یہ دستاویزی سیریز عام معلومات جمع کر کے بنائی گئی ہے۔ عدالت میں نیٹ فلکس کی جانب سے جمع کروائی گئی ایک فائلنگ کے مطابق سیریز کے ریلیز ہونے سے پہلے اس کو روکنے کا عدالت کا فیصلہ ʼآزادی اظہار کو روکتا ہے،اور نیٹ فلکس کو ʼعوامی مفاد کے معاملے پراظہار رائے کی آزادی کا حق حاصل ہے۔ بھارت میں نیٹ فلکس کے کئی شوز کو ʼنازیبا مواد یا ʼجذبات مجروح کرنےپر قانونی مشکلات کا سامنا رہا ہے لیکن ʼبیڈ بوائے بلین ائیرزسب سے ہائی پروفائل کیس ہے۔یاد رہے بھارت نیٹ فلکس کے لیے ایک بہت بڑی مارکیٹ ہے۔ بھارتی ریاست بہار کی

ہائی کورٹ کے مطابق یہ سیریز سبرتا روئے کی ساکھ کو یقینی طور پر نقصان پہنچائے گی۔سبرتا روئے نے اس بارے میں ابھی تک اپنا موقف نہیں دیا۔نیٹ فلکس کے مطابق اس سیریز کی تشہیر پر اس نے بہت بڑی رقم خرچ کی ہے اور عدالتی حکم امتناع نیٹ فلکس کے لیے مالی اور ساکھ کے نقصان کا باعث بن سکتا ہے۔نیٹ فلکس نے ʼبیڈ بوائے بلین ائیرزکو ایک تحقیقاتی ڈاکیوسیریز قرار دیا ہے جو بھارت کے معروف ٹائیکونز کے مبینہ لالچ، دھوکہ دہی اور بدعنوانی کو بے نقاب کرتی ہے۔

دل لگی سے مزید