آپ آف لائن ہیں
ہفتہ12؍ربیع الثانی 1442ھ 28؍نومبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

علی رضا سید کی مقبوضہ کشمیر کے اخبار کا دفتر سیل کرنے کی مذمت

چیئرمین کشمیر کونسل ای یو علی رضا سید نے مقبوضہ کشمیر کے دارالحکومت سری نگر میں بھارتی حکام کی طرف سے  اخبار کشمیر ٹائمز کے دفتر کو سیل کرنے کی مذمت کی ہے۔

کشمیر ٹائمز کی مالک انورادھا بھاسن کی طرف سے سوشل میڈیا پر جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ حکام نے بلاوجہ بغیر پیشگی نوٹس کے  پریس انکلیو میں واقع کشمیر ٹائمز کے دفتر کو سیل کردیا ہے۔

چیئرمین کشمیر کونسل ای یو نے اپنے بیان میں اس بھارتی اقدام کی مذمت کرتے ہوئے اسے فریڈم آف پریس کے بین الاقوامی قوانین اور کسی بھی جمہوری معاشرے میں موجود صحافتی اصولوں کی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔

انہوں نے مقبوضہ کشمیر سے شائع ہونے والے حقیقت شناس اخبارات اور ان اخبارات میں کام کرنے والے ان صحافیوں کی پیشہ ورانہ خدمات کو سراہا ہے جو اپنی جان پر کھیل کر اس خطے کی خراب صورتحال خاص طور پر بڑے پیمانے پر رونما ہونے والی انسانی حقوق کی پامالیوں کے بارے میں دنیا کو آگاہ کرتے رہتے ہیں۔

علی رضا سید نے کہا کہ ہم ان اصول پسند اخبار مالکان اور کشمیری صحافیوں کی جرات کو داد دیتے ہیں جو خطرات اور دھمکیوں کے باوجود دنیا کو مقبوضہ کشمیر کے بارے میں حقائق بتا رہے ہیں۔

انھوں نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی حکومت کی طرف سے اظہار رائے کی آزادی پر پابندیوں اور خصوصاً پریس کی آزادی پر قدغن کی سخت الفاظ میں مذمت کی۔

واضح رہے کہ بھارتی حکام کے ہاتھوں مقبوضہ کشمیر میں میڈیا پر سنسرشپ اور پابندیاں معمول بن چکا ہے اور اس کے علاوہ صحافیوں کو ہراساں کیا جاتا ہے اور جان لیوا حملوں کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔


چیئرمین کشمیر کونسل ای یو نے دنیا کی بااثر حکومتوں اور عالمی اداروں سے مطالبہ کیا کہ وہ بھارت پر دباؤ ڈالیں تاکہ مقبوضہ کشمیر میں اخبارات پر پابندیاں ختم ہوں اور صحافیوں کو آزادانہ رپورٹنگ کرنے کی اجازت دی جائے۔

علی رضا سید نے کشمیر ٹائمز کے ذمہ داران اور اس سے وابستہ صحافیوں سے  یکجہتی کا اظہار کیا اور بین الاقوامی صحافتی تنظیموں خصوصاً رپورٹرز ساں فرنٹیئرز سے مطالبہ کیا کہ وہ بھارتی حکام کی طرف سے کشمیر ٹائمز کے دفتر کو بند کیے جانے کا نوٹس لیں اور مقبوضہ کشمیر کے صحافیوں کے حقوق اور ان کی سلامتی کو یقینی بنائے۔

بین الاقوامی خبریں سے مزید