آپ آف لائن ہیں
بدھ6؍ جمادی الثانی 1442ھ 20؍جنوری 2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

روس اور ترکی کے درمیان ریلوے منصوبے پر اہم پیش رفت

ماسکو ( نیوز ڈیسک) روس اور ترکی کے درمیان ریلوے لائن کے مجوزہ منصوبے میں اہم پیش رفت سامنے آئی ہے۔ خبررساں اداروں کے مطابق روس او رترکی کے درمیان مجوزہ ریلوے لائن منصوبے کے ضمن مین روس، آذربائیجان اور آرمینیا نے نگورنوکاراباخ میں اقتصادی راہداری قائم کرنے اور بنیادی ڈھانچے کے منصوبوں کو فروغ دینے سے متعلق ایک مشترکہ اعلامیہ جاری کیا ہے۔ اس ضمن میں روسی صدر ولا دیمیر پوٹن نے آذری صدر الہام علییف اور آرمینی وزیر اعظم نیکول پاشنیان کے ساتھ کریملن میں 4 گھنٹے طویل مذاکرات کیے۔ اس کے بعد ایک بیان میں روس کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک کے درمیان اقتصادی راہداری اور بنیادی ڈھانچے کی تعمیر کے حوالے سے ایک مشترکہ اعلامیے پر دستخط ہو گئے ہیں۔ اس مقصد کے تحت روس، آرمینیا اور آذربائیجان کے نائب وزرائے اعظم کی قیادت میں ایک ورکنگ گروپ تشکیل دیا جائے گا۔ آذری صدر الہام علییف نے مشترکہ اعلامیے کی اہمیت کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ آذربائیجان 30 برسوں کے بعد براستہ آرمینیا مواصلاتی طریقے سے ناہچوان خود مختار جمہوریہ سے رابطہ استوار کرے گا۔ آرمینیا کو بھی آذری سرزمین سے روس اور ایران تک ریلوے لائن کے ذریعے رسائی ملے گی۔ علییف کا کہنا تھا کہ آذربائیجان براستہ ناہچیوان ترکی کی منڈی تک بھی رسائی

حاصل کر سکے گا، اور ترکی اور روس کے درمیان ریلوے لائن رابطہ بھی قائم ہو جائے گا۔ دوسری جانب پوٹن نے مذاکرات کے بعد کہا کہ امن معاہدے نے تنازع کے طویل مدتی اور مکمل حل کے لیے ایک ضروری بنیاد فراہم کردی ہے۔ انہوں نے روس کی جانب سے ثالثی کی کوششوں کے دوران تعاون کے لیے پاشینیان اور علییف دونوں کا شکریہ ادا کیا، اور کہا کہ اس کوشش کا مقصد خونریزی کو روکنا، صورت حال کو مستحکم کرنا اور پائیدار جنگ بندی کا حصول تھا۔

یورپ سے سے مزید