• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پولیس کی بکتر بند گاڑی نےٹکر مارکر بلوچستان اسمبلی کا گیٹ توڑ دیا



کوئٹہ میں بلوچستان اسمبلی کے باہر اپوزیشن جماعتوں کے رہنماؤں کے احتجاج کے باعث پولیس نے آنسوگیس کی شیلنگ شروع کردی۔ پولیس کی بکتر بند گاڑی نے ٹکر مارکر اسمبلی کا گیٹ توڑ دیا۔

پولیس اور انتظامیہ سے اپوزیشن جماعتوں کے کارکنوں کی ہاتھا پائی بھی ہوئی ہے۔

بلوچستان اسمبلی میں بجٹ اجلاس کی کارروائی اب تک شروع نہیں ہوسکی۔

پولیس اور انتظامیہ نے ایم پی اے ہاسٹل والے گیٹ کو زبردستی کھلوانے کی کوشش کی۔

 گیٹ توڑنے کے دوران زد میں آکر اراکین اسمبلی بابورحیم اور عبدالواحد صدیقی زخمی ہوگئے۔

 پولیس اور اراکین اسمبلی کے درمیان اسمبلی احاطے میں ہاتھا پائی ہوئی ،  ہاتھا پائی کےدوران رکن اسمبلی احمد نواز بلوچ گرگئے۔

 وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال بلوچستان اسمبلی پہنچ گئے، جام کمال کو ان کے وزراء اسمبلی کے اندر لے جانے میں کامیاب ہوگئے۔

جام کمال کے پہنچتے ہی ہنگامہ آرائی میں شدت آگئی ،جام کمال کے پہنچنے پر ہوئی ہنگامہ آرائی میں کئی دروازوں کے شیشے ٹوٹ گئے۔

جام کمال کے بلوچستان اسمبلی میں پہنچنے پر ہوئی ہنگامہ آرائی میں کئی گملے ٹوٹ گئے۔

دوسری جانب بلوچستان حکومت کے ترجمان لیاقت شاہوانی کا کہنا ہے کہ اپوزیشن نے آج بلوچستان اسمبلی کو یرغمال بنایا ہوا ہے۔

ترجمان حکومتِ بلوچستان لیاقت شاہوانی نے کہا کہ اپوزیشن سے ہضم نہیں ہورہا کہ ہم ایک بڑا بجٹ پیش کرنے جارہے ہیں۔

قومی خبریں سے مزید