• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

اسلام آباد ہائیکورٹ، نومولودبچی کی بازیابی کیلئے پولیس کو 3 دن کی مہلت

اسلام آباد (نمائندہ جنگ) اسلام آباد ہائی کورٹ نے 29 دن کی نو مولود بچی کی عدم بازیابی پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے پولیس کو بچی کی بازیابی کیلئے تین روز کی مہلت دی ہے۔ عدالت عالیہ کے جسٹس عامر فاروق نے کہا کہ 21 جون تک بچی کو عدالت میں پیش نہ کیا گیا تو ایڈیشنل آئی جی کو بلائینگے۔ دوران سماعت فاضل جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ آپ لوگوں کے پاس بہانہ ہوتا ہے کہ ایجنسیاں اٹھا کر لے گئیں ، اب اس کیس میں کیا بہانہ ہے؟ جمعہ کو جسٹس عامر فاروق نے 29 دن کی نومولود بچی کی بازیابی کیلئے اس کی والدہ یوسماں تصور کی درخواست کی سماعت کی۔ درخواست گزار کے وکیل سید عمار حسین شاہ نے کہا کہ بچی کی بازیابی کے عدالتی حکم پر تاحال عمل درآمد نہیں ہو سکا۔ عدالت نے ایس پی صدر فاروق بٹر کی سخت سرزنش کرتے ہوئے کہا کہ کیا آپ لوگ اتنے نا اہل ہیں کہ ایک نومولود بچی آپ سے برآمد نہیں ہو سکتی؟ بچی آپ سے برآمد نہیں ہو رہی ، اسلام آباد پولیس کس طرح کام کریگی؟ اگر آپ سے یہ کام نہیں ہوتا تو کسی اور افسر کو آرڈر کر دیتے ہیں۔ عدالت نے کہا کہ پیر تک اگر نومولود بچی پیش نہ کی تو اے آئی جی کو بلا لینگے۔

اہم خبریں سے مزید