• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

سعودی عرب سے آئے قیدیوں کا کورونا ٹیسٹ ہو گا

سعودی عرب سے رہا ہوکر پاکستان آنے والے قیدیوں کا لاہور ایئر پورٹ پر کورونا وائرس کا ٹیسٹ کیا جائے گا۔

لاہور ایئر پورٹ کے ذرائع کے مطابق کورونا وائرس کا ٹیسٹ کلیئر ہونے کے بعد قیدیوں کو گھروں کو جانے کی اجازت دی جائے گی۔

لاہور ایئر پورٹ کے ذرائع نے بتایا ہے کہ سعودی عرب سے رہائی پانے والے 28 میں سے 19 قیدی سرکاری اخراجات پر لاہور پہنچے ہیں۔

لاہور ایئر پورٹ کے ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ سرکاری اخراجات پر پاکستان آنے والے قیدیوں کے علاوہ 9 قیدی ذاتی سفری خرچ پر لاہور پہنچے ہیں۔

لاہور ایئر پورٹ کے ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ سعودی عرب سے رہائی پانے والے 19 میں سے 7 قیدیوں کا تعلق ضلع مہمند سے ہے۔

رہائی پانے والے پاکستانیوں نے وزیرِ اعظم پاکستان عمران خان اور سعودی حکومت کا شکریہ ادا کیاہے۔

قیدیوں کا کہنا تھا کہ حکومت کے شکر گزار ہیں کہ ہماری رہائی کیلئے اقدامات کیئے، حکومت اور عمران خان کا شکریہ ادا کرتے ہیں جنہوں نے ہمارے جرمانے بھی ادا کیئے۔

قیدیوں نے یہ بھی کہا کہ اپنے ملک واپس آ کر انتہائی خوشی ہو رہی ہے،لمبے عرصے بعد اپنے پیاروں سے ملنے کے لیے بیتاب ہیں۔

واضح رہے کہ وزیرِ اعظم عمران خان کی درخواست پر خادمِ حرمین شریفین سلمان بن عبدالعزیز نے ان 28 پاکستانیوں کو معافی دی ہے۔

رہائی پانے والے پاکستانی خصوصی طیارے کے ذریعے لاہور پہنچے جہاں ایئر پورٹ پر پی ٹی آئی کے رہنما سینیٹر اعجاز چوہدری نے قیدیوں کا استقبال کیا۔

اس موقع پر سینیٹر اعجاز چوہدری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس سے قبل 62 اور آج 28 لوگ وطن واپس آئے ہیں، اس کے لیے سعودی حکومت کے بھی شکر گزار ہیں۔

پی ٹی آئی کے سینیٹر نے مزید کہا کہ ان پاکستانیوں کو عمران خان کی کاوشوں سے اپنے پیاروں سے ملنے کا موقع ملا ہے۔

سینیٹر اعجاز چوہدری کا یہ بھی کہنا ہے کہ حکومت گلف میں پاکستانیوں کے مسائل حل کرنے کے لیے کوشاں ہے۔

قومی خبریں سے مزید