کویت میں 10 لاکھ کے قریب افراد کھانے کی لت میں مبتلا

September 19, 2023

علامتی فوٹو

کویت میں 10 لاکھ کے قریب افراد کھانے کی لت میں مبتلا ہیں۔ تحقیق کے مطابق ملک کی 20 فیصد آبادی یعنی 9 لاکھ 40 ہزار افراد کھانے کی لت کا شکار ہیں۔

'کھانے کی لت' کی تعریف یوں بیان کی گئی ہے کہ اس میں زیادہ توانائی والی غذا کھانا، نہ ختم ہونے والی بھوک اور بھوک نہ لگنے کے باوجود کھانا شامل ہے۔

کویت کی ڈاکٹر وفا الحشاش نے جنوری 2022 میں بھی اس موضوع پر ریسرچ کی تھی۔

ڈاکٹر وفا کا کہنا ہے کہ کھانے کی لت اسی طرح سے کام کرتی ہے جیسا کہ نشے کی لت، اس سے دماغ کے نیورو ٹرانسمیٹر پر فرق پڑتا ہے۔ نیورو ٹرانسمیٹر ڈوپامائن کی مقدار پر اثرانداز ہوتے ہیں جس سے خوشی کا احساس ہوتا ہے۔

وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ کھانے کی لت کے شکار افراد کو بڑی مقدار میں غذا کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ وہ خوشی کا احساس برقرار رکھ سکیں۔

کھانے کی عادت میں مبتلا افراد زیادہ تر میٹھی، گندم سے بنی غذا کے عادی ہوجاتے ہیں، اس میں پیزا، چاکلیٹ، چپس، برگر، پنیر، پیسٹری اور مشروبات شامل ہیں۔