Advertisement

رُشد و ہدایت: عزم واستقلال …!

September 06, 2019
 

امام حسینؓ کامقدس قافلہ’’ قصربنی مقاتل ‘‘کے مقام پر پہنچا تو آپ نے اپنے جاں نثاروں کووہاں خیمہ زن ہونے کاحکم دیا،رات دیر تک مناجات اورعبادت کے بعدابھی امام حسینؓ کی آنکھ لگی ہی تھی کہ اِنَّالِلّٰہِ وَاِنَّااِلَیْہِ رَاجِعُونْ وَالْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعَالَمِین کہتے ہوئے بیدار ہوگئے، آپ کے صاحبزادے سیدنا زین العابدینؓ نے پوچھا ابا جان! آپ نے پہلے اِنَّالِلّٰہ اور پھراَلْحَمْدُ لِلّٰہ کیوں پڑھا؟ فرمایا:’’میری آنکھ لگ گئی تھی کہ میں نے خواب میں ایک سوارکودیکھا،وہ کہہ رہا تھا کہ قوم جارہی ہے اورموت اُس کی طرف بڑھ رہی ہے، یہ خواب ہماری شہادت کی خبر ہے۔ شیر دل صاحبزادے نے یہ سن کرکہا:اباجان!اللہ آپ کوبرے وقت سے بچائے، کیا ہم حق پرنہیں ہیں؟ فرمایا:اللہ کی قسم، ہم حق پر ہیں، عرض کیا:جب حق کی راہ میں موت ہے توکوئی پروا نہیں، فرمایا: اللہ میری جانب سے تمہیں اس عزم واستقلال کی جزائے خیردے۔(کنزالعمال)


مکمل خبر پڑھیں